ترکی میں آن لائن جھوٹی خبریں روکنے کیلئے قانون سازی ہو گی

0 728

حکمران جسٹس اینڈ ڈویلپمنٹ پارٹی (آق پارٹی) کے ایک سینئر عہدیدار نے کہا ہے کہ ڈیجیٹل پلیٹ فارمز کو عالمی معیارات، جیسا کہ EU’s Digital Services Act (DSA) کے مطابق ریگولیٹ کرنے کی کوشش کرتے ہوئے ایک قانون سازی بل جلد ہی پارلیمنٹ میں پیش کیا رہا ہے۔

آق پارٹی کے نائب صدر ماہر اُونال نے میڈیا کو بتاتے ہوئے کہا ہے کہ "ہم بھی ویسے ہی اپنا ڈیجیٹل قانونی بل لائیں گے جس طرح یورپی یونین نے اپنا ڈیجیٹل سروسز ایکٹ 23 اپریل 2002 کو پاس کیا تھا۔ یورپی یونین کا ڈیجیٹل سروسز ایکٹ انٹرنیٹ کے [استعمال] پر اہمیت رکھتا ہے۔ یہ اس اصول پر مبنی ہے کہ جو چیز حقیقی زندگی میں غیر قانونی ہے وہ انٹرنیٹ پر بھی غیر قانونی ہونی چاہیے۔”

ڈیجیٹل سروسز ایکٹ کے ساتھ ساتھ، یورپی یونین نے ڈیجیٹل مارکیٹس ایکٹ کا قانون بھی پاس کر رکھا ہے، جس کا مقصد ایک محفوظ ڈیجیٹل اسپیس بنانا ہے جہاں نہ صرف صارفین کے بنیادی حقوق کا تحفظ ہو بلکہ کاروبار کے لیے برابری کا میدان قائم کیا جائے۔

پے در جرمانوں کے بعد یوٹیوب نے ترکی میں نمائندہ مقرر کرنے کا اعلان کر دیا

اُونال نے کہا کہ اس بل کی ذریعے، ڈیجیٹل ذرائع کی مدد سے جھوٹی خبروں کو روک دیا جائے گا اور آن لائن پلیٹ فارمز کے الگورتھم زیادہ شفاف ہوں سکیں گے، جو کہ غلط معلومات کے ذرائع کو ڈھونڈنے اور کنٹرول کرنے کے لیے اہم ہے۔

اُونال نے کہا کہ قانون اقلیتوں کو بہتر تحفظ فراہم کرے گا اور قریب سے جانچ پڑتال کا نظام تیار کیا جائے گا۔

اس سے قبل ترکی نے سوشل میڈیا ریگولیشن کا بل بھی پاس کیا تھا جس سماجی رابطوں کی ویب سائٹس کو قانونی طور پر ترکی میں اپنے نمائندے اور دفتر بنانے کا حکم دیا گیا تھا۔

تبصرے
Loading...
%d bloggers like this: