فتح اللہ گولن دہشتگرد تنظیم کے کوسوو سے 6 اعلیٰ سطحی ارکان گرفتار، ترکی کے حوالے

0 1,012

بلقان میں فتح اللہ گولن دہشتگرد تنظیم فیتو کے 6 اعلیٰ سطحی اراکان کو جمعرات کے روز کوسوو سے گرفتار کیا گیا اور ترکی لایا گیا۔ یہ کاروائی ترک اور کوسوار انٹیلی جینس سروسز کی طرف سے مشترکہ طور پر کی ہے۔

ترک خبر رساں ادارے انادولو ایجنسی کے مطابق مشتبہ افراد کے نام جہان اوزکان، کہرمان دمیرز، حسن حسین گوناکان، مصطفیٰ ایددم، عثمان کاراکایا اور یوسف کارابنا شامل ہیں، انہوں کوسوسو سے گرفتار کر کے خصوصی پرائیویٹ جہاز پر ترک نیشنل ایٹیلی جنس ایجنسی ترکی لائی۔

یہ مشتبہ افراد فتح اللہ گولن کے تحت کوسوو میں چلنے والے پرائیویٹ اسکول نیٹ ورک گولنستان اور محمد عاکف کے انچارج تھے۔

ذرائع نے مزید بتایا ہے کہ یہ انچارچ خطے میں فتح اللہ گولن کی سرگرمیاں چلا رہے تھے اور ترکی سے فتح اللہ گولن تنظیم کے ممبران کو امریکہ اور یورپ میں بھیجتے تھے جہاں فتح اللہ گولن ایک مضبوط نیٹ ورک کے ساتھ موجود ہے۔

کوسوو پولیس کے مطابق گرفتاریوں کے بعد بھی چھاپے جاری رکھے جائیں گے۔

کوسووار وزرات داخلہ کے مطابق تمام مشتبہ افراد کے رہائشی پرمٹ منسوخ ہو چکے تھے جبکہ کوسوو وزرات قانون کے مطابق وزرات کسی بھی غیر ملکی کے سیکیورٹی، کرمینل، طبی، عوامی، اخلاقی یا انسانی حقوق کے خطرے کے پیش نظر رہائشی پرمٹ منسوخ کر سکتی ہے۔

پاکستان میں بھی فتح اللہ گولن دہشتگرد تنظیم کے تحت چلنے والے پرائیویٹ پاک ترک اسکولز سے منسلک ترک اسٹاف کے رہائشی پرمٹ منسوخ کر دئیے گئے تھے لیکن پاکستانی عدالتوں نے انہیں محفوظ راستہ دیتے ہوئے حکم نامہ منسوخ کر دیا تھا جس کی وجہ سے ان اداروں سے وابستہ لوگ یورپ فرار ہو گئے یا پاکستان میں ہی روپوش ہو گئے۔

فتح اللہ گولن دہشتگرد تنظیم ترکی کی 15 جولائی 2016 کی بغاوت میں ملوث تھی جس میں اس گروپ سے وابستہ فوجی عناصر نے جمہوری حکومت کے خلاف خونی بغاوت کی اور تنظیم سے منسلک دیگر اداروں میں افراد نے انہیں مدد پہنچانے کی کوشش کی۔ لیکن ترک عوام کی تاریخ ساز مزاحمت سے یہ بغاوت ناکام ہو گئی۔

تبصرے
Loading...