سودان نے باغی ترجمان کو گرفتار کرلیا

0 1,539

سودان کی افواج نے دارالحکومت خرطوم سے باغی سودان پیپلز لبریشن موومنٹ – نارتھ (SPLM-N) کے ترجمان کو گرفتار کرلیا ہے۔

SPLM-N کے ذرائع نے نام ظاہر نہ کرنے کی شرط پر بتایا ہے کہ "مبارک اردول کو خرطوم میں سنیچر کو رہائش گاہ پر پڑنے والے چھاپے میں گرفتار کیا گیا تھا۔”

سودانی حکام نے ابھی تک اس گرفتاری کی تصدیق نہیں کی۔

اردول اپریل کے اوائل میں طویل عرصے تک برسرِ اقتدار رہنے والے صدر عمر البشیر کا تختہ الٹنے کے بعد متعدد باغی رہنماؤں کے ساتھ خرطوم پہنچے تھے۔

ان کی گرفتاری SPLM-N کے رہنما یاسر ارمان کی سودانی افواج کے ہاتھوں گرفتاری کے چند روز بعد عمل میں آئی ہے۔

افواج کے ساتھ تصادم میں کئی مظاہرین کے مارے جانے کے بعد بدھ کو سودان کی عبوری ملٹری کونسل (TMC) کے سربراہ عبد الفتح البرہان نے کہا تھا کہ کونسل حزبِ اختلاف کے ساتھ "نئے آغاز” کے لیے تیار ہے۔

ان کا یہ بیان حزب اختلاف کے آزادی و تبدیلی اتحاد کے ساتھ مذاکرات کی TMC کی جانب سے معطلی اور اگلے سال کے اوائل میں انتخابات کی نگرانی کے لیے "عبوری حکومت” کی تشکیل کے بعد آیا۔

سودان 11 اپریل سے ہنگاموں کا شکار ہے کہ جب فوجی اسٹیبلشمنٹ نے صدر عمر البشیر کے 30 سالہ اقتدار کے خلاف عوامی مظاہروں کے بعد ان کا تختہ اُلٹا۔

TMC اب دو سالہ "عبوری دور” کی نگرانی کر رہی ہے جس کے دوران انہوں نے آزادانہ صدارتی انتخابات کا وعدہ کیا ہے۔

البتہ مظاہرین بدستور سڑکوں پر ہیں اور ملٹری کونسل سے جلد از جلد اقتدار چھوڑ کر اسے سویلین اتھارٹی کے حوالے کرنے کا مطالبہ کر رہے ہیں۔

تبصرے
Loading...