دہشتگرد تنظیمیں اسلامو فوبیا کی پرورش کرتی ہیں، دہشتگردی کو جان بوجھ کراسلام سے نتھی کیا جاتا ہے، ایردوان

0 203

ترک صدر رجب طیب ایردوان نے ڈویلپنگ ایٹ ممالک تنظیم کے 9ویں اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا: "مجھے کوئی شک نہیں ہے کہ ڈی ایٹ ممالک تنظیم جو آج اپنی بیسیوں سالگرہ منا رہی ہے، یہ عالمی امن، خوشحالی اور استحکام کے لیے خدمات جاری رکھے گی۔ اس مرحلے میں ہماری ذمہ داری ہے کہ ہمارے ممالک کے مستقبل کے لئے ہم ڈی ایٹ کے تحت تمام شعبوں میں تعاون کو مزید مضبوط کریں اور اس کی توسیع سے نہ ڈریں۔ میرا مطلب ہے کہ ڈی ایٹ، ڈی ٹوینٹی بھی بن سکتی ہے”۔

ایسے اجلاس ہمہ جہتی تعاون کے فروغ میں معاون ہیں

صدر ایردوان نے کہا: "جب تک وہ ہمہ جہتی تعاون کے فروغ کے لیے تعاون کرتے ہیں، ایسے اجلاس دو طرفہ تعلقات کی ترقی پر مثبت طریقے سے اثر انداز ہوتے ہیں”۔

انہوں نے مزید کہا: "مجھے کوئی شک نہیں ہے کہ ڈی ایٹ ممالک تنظیم جو آج اپنی بیسیوں سالگرہ منا رہی ہے، یہ عالمی امن، خوشحالی اور استحکام کے لیے خدمات جاری رکھے گی۔ اس مرحلے میں ہماری ذمہ داری ہے کہ ہمارے ممالک کے مستقبل کے لئے ہم ڈی ایٹ کے تحت تمام شعبوں میں تعاون کو مزید مضبوط کریں اور اس کی توسیع سے نہ ڈریں۔ میرا مطلب ہے کہ ڈی ایٹ، ڈی ٹوینٹی بھی بن سکتی ہے”۔

روہینگیا کا بوجھ اکیلے بنگلہ دیش پر نہیں ڈالنا چاہیے

صدر ایردوان نے اس بات کا ذکر کیا کہ ڈی ایٹ کے رکن ممالک صرف  تماشائی نہیں بننا ہوگا اور روہنگیا کے بوجھ کو صرف بنگلہ دیش پر نہیں لادھ دینا ہو گا، "ہمیں امید کا ہاتھ چھوڑے بغیر آہستہ آہستہ حل کی طرف بڑھنےکی ضرورت ہے اور اگر ہم تھک بھی جائیں تو اس مسئلے دور نہیں ہٹنا چاہیے”۔

دہشتگرد تنظیمیں اسلامو فوبیا کی پرورش کرتی ہیں

ایردوان نے کہا: "ہم اس عہد سے گزر رہے ہیں جب دہشتگردی کے خطرات ہم سے زیادہ دور نہیں رہے لیکن پھر بھی اچھے اور بُرے دہشتگردوں میں تمیز کی جاتی ہے۔ عالمی سطح پر ایک طبقہ جان بوجھ کر اسلام کو دہشتگردی سے نتھی کر رہا ہے، اور مسلمانوں کو دہشتگردوں سے نتھی کر رہا ہے۔ وہ لوگ بوکو حرام، داعش، فیتو اور الشباب جیسی دہشتگرد تنظیموں کے قتل عام سے اسلامو فوبیا کی نشو و نما کر رہے ہیں”۔

تبصرے
Loading...