لیبیا میں جنگ بندی اعلیٰ سطح کی نہیں ہے، صدر ایردوان

0 167

لیبیا میں جنگ بندی کے حوالے سے استانبول میں صحافیوں کے سوالوں کے جوابات دیتے ہوئے صدر رجب طیب ایردوان نے کہا کہ "عارضی صلح کا معاہدہ اعلیٰ سطحی جنگ بندی نہیں ہے۔ وقت ہی بتائے گا کہ یہ کتنی دیر برقرار رہتی ہے۔”

صدر رجب طیب ایردوان استانبول میں نمازِ جمعہ کی ادائیگی کے بعد صحافیوں کے سوالوں کے جوابات دے رہے تھے۔

لیبیا میں جنگ بندی

لیبیا میں معاہدے پر دستخط کے حوالے سے سوال پر صدر ایردوان نے کہا کہ "جس عارضی صلح پر معاہدہ کیا گیا ہے وہ اعلیٰ سطحی جنگ بندی نہیں ہے۔ وقت ہی بتائے گا کہ نچلی سطح پر یہ جنگ بندی کب تک برقرار رہتی ہے۔”

آذربائیجان میں پیشرفت

آذربائیجان کے صدر الہام علیف کی اس تجویز کے حوالے سے ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہ ترکی کو بھی منسک گروپ کا حصہ ہونا چاہیے، صدر ایردوان نے کہا کہ صدر علیف کے مطالبات کو نظر انداز کرنا ناممکن ہے۔

اس امر پر زور دیتے ہوئے کہ امن کے لیے بنائے گئے اس گروپ میں ترکی شمولیت کا اتنا ہی حقدار ہے جتنا روس انقرہ کے OSCE کی رکنیت کا، صدر ایردوان نے کہا کہ "منسک گروپ اب تک کوئی نتیجہ نہیں دے پایا۔ آذربائیجان جائز مطالبہ کر رہا ہے اور کہہ رہا ہے کہ اگر آرمینیا روس کو نامزد دے سکتا ہے تو ہم ترکی کو کریں گے اور اس لیے ترکی کو بھی روس کے ساتھ سرحدی تحفظ اور امن مذاکرات میں حصہ لینا چاہیے۔”

روس نے اس معاملے میں اب تک کوئی منفی رویہ ظاہر نہیں کیا اور کوئی منفی تبصرہ بھی نہیں کیا، صدر رجب طیب ایردوان نے کہا کہ ترکی اور روس نے اب تک آذربائیجان-آرمینیا، شام اور لیبیا کے معاملات میں مشترکہ طور پر کام کیا ہے۔ "مجھے امید ہے کہ مستقبل میں ہم شام اور لیبیا کے مسائل کے ساتھ ساتھ آذربائیجان-آرمینیا معاملے کو حل کرنے کے لیے بھی کامیاب اقدامات اٹھائیں گے اور ان مسائل کا تصفیہ کریں گے۔”

"ہم نے امریکا سے بھی کئی ہتھیار خریدے اور ان پر بھی تجربات کیے”

ایس-400 کے حوالے سے صدر ایردوان نے کہا کہ انہوں نے اس کے تجربات کیے ہیں اور یہ کہ اس حوالے سے امریکا کے مؤقف کی تائید ترکی پر لازم نہیں۔

صدر نے کہا کہ "ترکی نے امریکا سے بہت سے ہتھیار خریدے اور ان پر تجربات کیے۔ یونان بھی ایس -300استعمال کرتا اور اس کے تجربات کرتا ہے لیکن امریکا ویسا ردعمل نہیں دکھاتا جیسا کہ ترکی پر دکھاتا ہے۔ ہم پرعزم ہیں اور اپنے راستے پر چلتے رہیں گے۔”

تبصرے
Loading...