عالمی مسائل کے حل کے لیے جی20 کو زیادہ مؤثر اور مضبوط پلیٹ فارم ہونا چاہیے، صدر ایردوان

0 760

جی20 اوساکا اجلاس کے بعد پریس کانفرنس میں صدر ایردوان نے کہا کہ "بطور ترکی ہماری خواہش ہے کہ جی20 عالمی مسائل کے حل کے لیے زیادہ مؤثر، زیادہ نتیجہ خیز اور زیادہ مضبوط پلیٹ فارم بن جائے۔ اس ہدف کو حاصل کرنے کے لیے اراکین کو اپنے عہد پورا کرنے ہوں گے اور مناسب رویّےکا مظاہرہ کرنا ہوگا۔”

صدر رجب طیب ایردوان نے جاپان میں جی20 اوساکا اجلاس کے بعد ایک پریس کانفرنس سے خطاب کیا۔

"جی20 اراکین کو دہشت گردی کے خلاف ایک اصولی اور دلیرانہ مؤقف اپنانا چاہیے۔ دہشت گرد تنظیموں کو ان کے نظریات کے مطابق چھانٹنا اور ان سے مختلف رویہ اختیار کرنا غلط ہے۔ اس غلطی کی قیمت پوری انسانیت چکائے گی۔ درحقیقت کئی ممالک کو حالیہ کچھ عرصے میں دہشت گردی کے خونیں چہرے کا سامنا رہا ہے اور یہ صورت حال اب بھی جاری ہے۔”

"دہشت گردی پوری انسانیت اور انسانی اقدار کی دشمن ہے”

دہشت گردی کو پوری انسانیت اور انسانی اقدار کی دشمن قرار دیتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ "اس لیے ہمیں شناخت سے بالاتر ہوکر دہشت گردی کو دہشت گردی کہنے کی عادت اپنانا ہوگی۔ بدقسمتی سے بالخصوص شام کے معاملے میں اہم مسائل اور تضادات موجود ہیں۔ دہشت گرد تنظیمیں جیسا کہ PYD/PKK جو نسل کشی، بچوں کی جبری بھرتی اور عوام کو ہجرت پر مجبور کرتے ہیں لیکن کچھ ملکوں کی جانب سے بڑے پیمانے پر سراہے جاتے ہیں۔”

15 جولائی 2016ء کو حکومت کا تختہ الٹنے کی کوشش کے دوران 251 افراد کا بے رحمانہ قتل کرنے والے چند مغربی ملکوں کی پناہ میں ہیں، صدر ایردوان نے کہا کہ "سیاسی پناہ کے نام پر ان باغیوں کو تحفظ اور پناہ دینا جو جمہوریت کو نشانہ بنائیں، پوری انسانیت کو نقصان پہنچائے گا۔”

اس امر پر زور دیتے ہوئے کہ 80 فیصد سے زیادہ عالمی معیشت کی نمائندگی کرنے والوں ممالک کا سب پر اثر انداز ہونے والے دہشت گردی، بھوک اور مہاجرین جیسے مسائل سے لاتعلق رہنا ناقابلِ فہم ہے، صدر ایردوان نے کہا کہ ” بطور ترکی ہماری خواہش ہے کہ جی20 عالمی مسائل کے حل کے لیے زیادہ مؤثر، زیادہ نتیجہ خیز اور زیادہ مضبوط پلیٹ فارم بن جائے۔ اس ہدف کو حاصل کرنے کے لیے اراکین کو اپنے عہد پورا کرنے ہوں گے اور مناسب رویّےکا مظاہرہ کرنا ہوگا۔”

تبصرے
Loading...