استنبول کے صبیحہ گوکچن ایئرپورٹ پر جہاز رَن وے سے اتر گیا، تین ہلاک، 179 زخمی

0 318

استنبول کے صبیحہ گوکچن ایئرپورٹ پر پیگاسس ایئرلائنز کا ایک ہوائی جہاز لینڈنگ کے دوران رَن وے سے اتر گیا، جس کے نتیجے میں تین افراد ہلاک اور درجنوں زخمی ہو گئے۔

وزیر صحت فخر الدین خوجہ نے ایک بیان میں کہا کہ "تین افراد زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے چل بسے جبکہ 179 افراد اب بھی زیرِ علاج ہیں۔”

ازمیر سے استنبول پہنچنے والا یہ بوئنگ ‏737-800‎ طیارہ حادثے کے بعد تین حصوں میں تقسیم ہو گیا اور اس میں آگ بھی لگ گئی۔ آگ بجھانے اور ہنگامی صورتِ حال سے نمٹنے کے لیے عملہ فوراً ہی جائے وقوعہ پر پہنچا۔

جہاز 171 مسافر اور عملے کے چھ اراکین کے ساتھ استنبول پہنچا تھا، جہاں "ہارڈ لینڈنگ” کی وجہ سے یہ حادثہ پیش آیا۔

استنبول کے ایشیائی ضلع میں قائم اور بورصہ، کوجائیلی اور صقاریہ کے لیے استعمال ہونے والا یہ ایئرپورٹ حادثے کے بعد ٹریفک کے لیے بند کر دیا گیا۔

ترکی کی قومی پرچم بردار ترکش ایئرلائنز (THY) نے اعلان کیا کہ وہ ایئرپورٹ کے لیے اپنی تمام پروازیں منسوخ کر رہا ہے۔

پیگاسس ملک کی دوسری سب سے بڑی ایئرلائن ہے جو صبیحہ گوکچین کو اپنے مرکز کی حیثیت سے استعمال کرتی ہے۔ ایئرلائن نے ایک بیان میں کہا کہ پرواز نمبر PC2193 رن وے سے اتر گئی۔ اس وقت جنوب مغرب کی سمت سے چلنے والی تیز ہوائیں چل رہی تھیں اور بارش ہو رہی تھی۔

اس حادثے کی تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں۔

واضح رہے کہ 7 جنوری کو بھی پیگاسس ایئرلائنز کا ہی ایک ‏737-800‎ طیارہ اسی ہوائی اڈے پر رن وے سے اتر گیا تھا اور دو رن ویز کے درمیان رُک گیا تھا۔ اس واقعے میں کوئی زخمی نہیں ہوا تھا۔

جنوری 2018ء میں پیگاسس کا ایک اور بوئنگ ‏737-800‎ طیارہ بحیرۂ اسود کے کنارے واقع طرابزون شہر میں پھسل گیا تھا اور پانی میں گرنے سے بال بال بچا۔ اس واقع میں تمام 162 مسافر اور عملے کے چھ اراکین کو بحفاظت نکال لیا گیا تھا۔

20 سال سے خدمات انجام دینے والی پیگاسس ایئرلائنز 83 ہوائی جہازوں کا بیڑہ رکھتی ہے کہ جس میں 47 بوئنگ اور 36 ایئر بس طیارے شامل ہیں۔

تبصرے
Loading...