ترکوں کا دنیا پر کل عرصہ حکمرانی کتنا اور کہاں کہاں؟

0 3,949

لفظ ترک کے معنی ہیں "طاقتور اور مضبوط”.شروع میں ترک صرف اس قبیلے کا نام تھا جو منگولیا کے ایک پہاڑ "التاری” کے دامن میں آباد تھا۔ جب اس قبیلے کو فتوحات کی وجہ سے اہمیت حاصل ہوئی تو دیگر قبائل بھی اپنے آپ کو ترک کہنے لگے۔

شروع میں ان قبائل کا تعلق اسلامی ممالک سے صرف اتنا ہی تھا کہ یہ گروہوں کی صورت میں اسلامی بستیوں پر ہلہ بولتے اور لوٹ مار کرکے واپس چلے جاتے تھے ،منگول انہی ترکوں کے رشتہ دار تھے۔یہ ان پڑھ اور اکھڑ تھے۔ان کے سردار کا نام تموچن تھا جو چنگیز کے نام سے مشہور ہے۔

چنگیز کے بعد اس کی سلطنت اس کے چار بیٹوں میں تقسیم ہوگئی:

1) تولی
2)اوکتا
3) چغتائی
4) جوجی

تولی کے بیٹے ہلاکو نے سلطنت بغداد کو تاراج کیا اور انیس لاکھ نفوس قتل کر ڈالے اور کروڑوں کتابیں گٹھڑیاں باندھ کر دریائے دجلہ میں پھینک دیں۔کعبے کو پاسباں مل گئے صنم خانے سے ہلاکو کی اولاد مشرف بہ اسلام ہوئی اور انہی ترکوں کی اولاد سے دو طاقتور حکومتیں معرض وجود میں آئیں ۔ہند میں سلطنت مغلیہ اور ترکی میں سلطنت عثمانیہ۔مغل حکمرانوں نے 1526سے 1857 تک برصغیر میں کم و بیش 231 برس حکومت کی جبکہ عثمانیہ سلاطین نے 1299 سے 1923 تک۔

تحریر: احمد رضوان
بحوالہ: عالم اسلام از ڈاکٹر غلام جیلانی برق۔

تبصرے
Loading...