ترک ملت دنیا میں اپنا کھویا ہوا بہتر مقام دوبارہ بنانے کے لیے پُر عزم ہے، ایردوان

0 207

قونیا میں ایک عوامی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے ترک صدر رجب طیب ایردوان نے کہا ہے: "اب ترکی اپنی اصلی طاقت اور حدود کا محسوس کر رہا ہے- جسے دیکھتے ہوئے کچھ لوگ پاگل ہوئے جاتے ہیں- آج ترکی اپنی طاقت، صلاحیتوں اور قابلیتوں کے بارے آگاہ ہے- ترک ملت اپنے کروڑوں بھائیوں اور بہنوں کے ساتھ دنیا میں اپنی حقیقی پوزیشن کو بحال کرنے کے لیے پر عزم ہے”۔

ہم مل کر اپنے ملک کو ایک روشن مستقبل کی طرف لے جائیں گے

صدر ایردوان نے اس بات کا اظہار کیا کہ اتحاد کے ذریعے ہم چالوں کو ناکام بنا سکتے ہیں جب ترکی پر جنونی سرحدوں اور معیشت پر کھیل کھیلے جا رہے ہیں- انہوں نے کہا: "ہم ایک رہیں گے، ہم ایک ہو کر مضبوط ہوں گے- ہم ایک دوسرے کے بہن اور بھائی بنیں گے اور مل کر عظیم ترکی بن کر موجودہ صورتحال کو توڑ سکتے ہیں- ہم نے اس سے قبل ایسا ہی گیلی پولی میں اپنی جنگ آزادی میں کیا تھا اور 15 جولائی کی غداری میں یہی عزم برقرار رکھا تھا- ان شاء اللہ آنے والے ماحول میں ہم اسی ارادے، عزم اور بہادری کے ذریعے اپنے ملک کو ایک روشن مستقبل کی طرف لے کر جائیں گے”۔

صدر ایردوان نے "ایک قوم، ایک پرچم، ایک وطن اور ایک ریاست” کے خیال پر زور دیا اور کہا: "وہ ہمیں تقسیم نہیں کر سکیں گے، ان شاء اللہ وہ ہمیں توڑ کر علیحدہ علیحدہ نہیں کر سکیں گے۔ اور ان شاء اللہ ہم ملک کو مزید طاقتور سے طاقتور بنا کر دنیا کے سامنے ترکوں اور ترکی کی عظمت کی بحالی کا اعلان کریں گے”۔

ترکی اپنی طاقت اور اس کے مزید امکانات سے واقف ہے

انہوں نے کہا: "اب ترکی اپنی اصلی طاقت اور حدود کا محسوس کر رہا ہے- جسے دیکھتے ہوئے کچھ لوگ پاگل ہوئے جاتے ہیں- آج ترکی اپنی طاقت، صلاحیتوں اور قابلیتوں کے بارے آگاہ ہے- ترک ملت اپنے کروڑوں بھائیوں اور بہنوں کے ساتھ دنیا میں اپنی حقیقی پوزیشن کو بحال کرنے کے لیے پر عزم ہے”۔

انہوں نے بتایا کہ ترکی گزشتہ 15 سالوں میں 3 گنا زیادہ ترقی کر چکا ہے اور اب انہیں 2023ء کے اہداف کو حاصل کرنے سے کوئی نہیں روک سکے گا۔ صدر ایردوان نے کہا: "وہ ہمیں روکنا چاہتے ہیں، لیکن ہم چلتے رہیں گے، ہمارے بارے میں، وہ کہتے ہیں ‘وہ ترقی نہیں کر سکتے’ لیکن اب دیکھو، ترکی امسال 5۔1فیصد شرح نمو پر جا رہا ہے۔ یہ ان کے لیے مزید حیران کن ہو گا جب یہ شرح نمو اس سال کے خاتمے پر ان شاء اللہ 7 فیصد ہو چکی ہو گی”۔

 

تبصرے
Loading...