مقبوضہ علاقوں میں اسرائیل کے آبادکاری منصوبے پر ترکی کی تنقید

0 265

ترک وزارت خارجہ نے اسرائیلی وزیر اعظم بن یامین نیتن یاہو کے مقبوضہ مشرقی القدس میں ہزاروں نئی غیر قانونی آبادیاں تعمیر کرنے کے منصوبے کی مذمت کی ہے۔

اس منصوبے کا اعلان جمعرات کو عام انتخابات سے قبل کیا گیا تھا کہ جس میں اُن کی جماعت پہلے اکثریت لینے میں ناکام رہی تھی۔ ترک وزارت کا کہنا ہے کہ اس پالیسی بین الاقوامی قانون اور اقوامِ متحدہ کی قراردادوں کی خلاف ورزی کی ہے۔ اسرائیلی انتظامیہ ہر بار انتخابات سے قبل بین الاقوامی قوانین کو نظر انداز کرتی ہے، جو تل ابیب کی روایت بن چکی ہے۔

بیان میں کہا گیا کہ اسرائیل کو امریکا کے حالیہ نام نہاد "ڈیل آف دی سنچری” منصوبے سے اتنی جرات ملی ہے۔ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی جانب سے پیش کی گئی یہ یکطرفہ "ڈیل” مسئلہ فلسطین پر اقوامِ متحدہ کی پچھلی تمام قراردادوں کو منسوخ کرتی ہے اور اسرائیل کو وہ سب کچھ دیتی ہے جس کا وہ مطالبہ کرتا ہے۔

وزارت کے بیان میں زور دیا گیا کہ فلسطینی اپنی زمینوں کے واحد مالک تھے اور اسرائیل کی مقبوضہ پالیسیاں اس حقیقت کو کبھی تبدیل نہیں کر سکتیں۔

قبل ازیں فلسطین نے مشرقی القدس میں آباد کاروں کے لیے ہزاروں نئے گھروں کی تعمیر کے منصوبے کی مذمت کی اور اسے انتخابات کے لیے چال قرار دیا۔

تبصرے
Loading...