ترکی نے مشرقی بحیرۂ روم میں ‘عروج رئیس’ کی سرگرمیاں بڑھا دیں

0 171

ترکی نے مشرقی بحیرۂ روم میں سیسمک ریسرچ بحری جہاز ‘عروج رئیس’ کی سرگرمیوں کو 27 اگست تک توسیع دینے کا حکم جاری کر دیا ہے۔ یہ حکم ترک بحری افواج کے آفس فار نیوی گیشن ہائیڈروگرافی اینڈ اوشنوگرافی (OHNO) نے جاری کیا ہے۔

بیان کے مطابق عروج رئیس، اتامان اور چنگیز خان بحری جہازوں کے سیسمک سروے 27 اگست تک بڑھا دیے گئے ہیں۔

10 اگست کو ترکی نے اعلان کیا تھا کہ عروج رئیس خطے میں 23 اگست تک کام کرتا رہے گا۔

ترکی کے جنگی بحری جہاز مشرقی بحیرۂ روم میں ‘عروج رئیس’ کی حفاظت کررہے ہیں۔

پچھلے مہینے ایتھنز نے کاستیلوریزو کے جزیرے کے جنوب میں انقرہ کے سیسمک سروے پر اعتراض کیا تھا، جس کے بعد جرمن سفارتی کوششوں سے دونوں پڑوسیوں کے مابین کشیدگی میں کمی آئی۔

لیکن یونان کی جانب سے مصر کے ساتھ بحری سرحدوں کی حد بندی کے معاہدے پر دستخط نے معاملہ ایک بار پھر گرم کر دیا، جو ترکی کے خیال میں اس کے براعظمی کنارے (continental shelf) اور بحری حقوق کی خلاف ورزی ہے اور یوں ایتھنز اور انقرہ کے مابین ایک مرتبہ پھر کشیدگی پیدا ہو گئی۔

ترکی عرصہ دراز سے یونانی قبرص کی جانب سے مشرقی بحیرۂ روم میں یک طرفہ ڈرلنگ پر اعتراض کرتا رہا ہے اور اس کا کہنا ہے کہ خطے کے وسائل پر ترک قبرص کا بھی حق ہے۔

تبصرے
Loading...