ترکی نے بحیرۂ اسود میں گیس کے وسیع ذخائر دریافت کر لیے، صدر ایردوان کا اعلان

0 2,023

ترکی نے بحیرۂ اسود میں سب سے بڑے قدرتی گیس کے ذخائر دریافت کر لیے ہیں، جس کا اعلان جمعے کو صدر رجب طیب ایردوان نے کیا۔

صدر ایردوان نے بتایا ہے کہ تقریباً 320 ملین مکعب میٹر قدرتی گیس بحیرۂ اسود کے ٹونا-1 زون میں دریافت ہوئی ہے۔ یہ نو دریافت شدہ ذخائر بڑے ذخیروں کا محض ایک حصہ ہیں اور ملک مستقبلِ قریب میں مزید دریافت جاری رکھے گا۔

صدر ایردوان نے بدھ کو کہا تھا کہ ان کے پاس ایک اچھی خبر ہے، جس سے ترکی کے ایک نئے دور کا آغاز ہوگا۔

ترکی کے پہلے تیل اور گیس ڈرلنگ بحری جہاز فاتح نے شمالی ترکی کی بندرگاہ طرابزون سے 25 جون کو سفر شروع کیا تھا تاکہہ وہ بحیرۂ اسود میں ڈرلنگ مشن کا آغاز کرے۔ فاتح نے ٹونا-1 زون میں وسط جولائی میں ڈرلنگ سرگرمیاں شروع کیں۔ جس کا اعلان اُس وقت توانائی اور قدرتی وسائل کے وزیر فاتح دونمیز نے کیا تھا۔

استنبول کے عثمانی فاتح سلطان محمد فاتح کے نام سے موسوم یہ بحری جہاز اس علاقے میں سرگرمیاں کر رہا ہے کہ جہاں ڈرلنگ بہت عرصے سے رکی ہوئی تھی۔

ٹونا-1 زون دریائے ڈینیوب کے کنارے پر بلغاریہ اور رومانیہ کی بحری سرحدوں کےقریب واقع ہے۔

ترکی کے پہلے seismic بحری جہاز باربروس خیر الدین پاشا نے پہلے بحیرۂ اسود میں seismic سروے کیے تھے اور ترک کی سمندری حدود کے اندر قدرتی وسائل کے بڑے ذخائر کا پتہ لگایا تھا۔ اسی ڈینیوب بلاک میں رومانیہ اور بلغاریہ کئی سالوں سے تیل اور گیس نکال رہے ہیں۔

229 میٹر لمبا بحری جہاز، جس کا کل وزن 5283 ٹن ہے، 40 ہزار فٹ کی گہرائی تک کھدائی کر سکتا ہے۔

تبصرے
Loading...