ترکی تین نئے مقامی جنگی بحری جہاز بنانے کے لیے کوشاں

0 416

ترکی کے اعلیٰ ترین دفاعی صنعتی ادارے نے اعلان کیا ہے کہ وہ نیشنل شپ (MILGEM) پروجیکٹ کے تحت تین نئے جنگی بحری جہاز تیار کرنے کے لیے ایک ٹینڈر پیش کرے گا کہ جو پہلے ہی ترک بحری افواج کو مقامی طور پر تیار کردہ جنگی جہاز فراہم کر چکا ہے۔

دفاعی صنعت کی صدارت (SSB) کا کہنا ہے کہ نئے جہازوں میں مقامی طور پر تیار کردہ پرزوں کی پیداواری شرح پہلے سے زیادہ ہوگی۔ ادارے کے سربراہ اسماعیل دیمر نے بتایا ہے کہ وہ جدید ترین ٹیکنالوجی کی مدد سے مسلح افواج کی ضروریات کو پورا کرنے کی کوششیں جاری رکھیں گے، جن کا ہدف ترکی کو دفاعی صنعت میں مکمل طور پر خود مختار بنانا ہے۔

اسماعیل دیمر نے کہا کہ مادر وطن کا دفاع اس سعی و جدوجہد کا اہم حصہ ہے اور ہم اپنی بحری قوت کو بڑھانے کی کوششیں کر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ "ہمارے مقامی دفاعی ادارے ایسے بحری جہاز بنانے کی صلاحیت و قابلیت رکھتے ہیں کہ اس قیمت پر ان کا کوئی مقابل نہیں۔ اس صلاحیت کے ساتھ ہم MILGEM پروجیکٹ میں ایک قدم مزید آگے بڑھا رہے ہیں۔ چھٹے، ساتویں اور آٹھویں بحری جہاز کے لیے ٹینڈر کا عمل شروع ہو چکا ہے۔ اس بار مقامی پرزوں کی شرح کہیں زیادہ ہوگی۔”

"ہم اپنی فوج کے لیے یہ جہاز جلد از جلد پیش کرنا چاہتے ہیں۔ ہمارے نئے بحری جہازوں میں مزید مقامی طور پر تیار کردہ ساز و سامان اور ہتھیاروں کے نظام موجود ہیں۔ یہ بحریہ کی صلاحیت کو بہتر بنائیں گے، دوستوں کا اعتماد جیتیں گے اور دشمن کے دل میں خوف بٹھائیں گے۔”

یہ پروجیکٹ ایسے بحری جہاز بنانے کے لیے ہے جو نگرانی و نگہبانی، اہداف کی تلاش، شناخت و پہچان، قبل از وقت خبردار کرنے والے مشن ، بحری اڈے اور بندرگاہوں کے دفاع، دشمن کی آبدوزوں کو تباہ کرنے، سطحِ آب پر جنگ، فضائی جنگ، بحری و زمینی آپریشنز اور گشت کی سرگرمیوں کا کام کرتے ہیں۔

MILGEM منصوبہ اب تک ایڈا کلاس جنگی بحری جہازوں کی تکمیل مکمل کر چکا ہے، جن میں سے پہلے 2011ء میں، دوسرا 2013ء، تیسرا 2018ء اور چوتھا 2019ء میں بحریہ کے حوالے کیا گیا ہے۔ پانچواں بحری جہاز استنبول رواں سال پیش کیا گیا۔

یاد رہے کہ ترکی پاکستان بحریہ کے لیے بھی MILGEM جنگی بحری جہاز بنا رہا ہے۔

تبصرے
Loading...
%d bloggers like this: