سرمائے کی عالمی نقل و حرکت اور کساد بازاری سے ترکی اتنا ہی متاثر ہوا ہے جتنا کہ باقی ممالک، ترک وزیر البیراک

0 1,034

ترک وزیر برائے معیشت نے کہا ہے کہ ترکی سرمائے کی عالمی نقل و حرکت سے اتنا ہی متاثر ہوا ہے جتنا کہ باقی ممالک البتہ یہ اثر ماضی کے مقابلے میں بہت کم ہے۔

انہوں نے کہا، "کرنسی تبادلہ کی شرح میں کمی آتی ہے، وہ بڑھ جاتی ہے۔ اہم بات یہ ہے کہ ترکی اس تمام اتار چڑھاؤ کو ایک کنٹرول انداز میں منظم کر رہا ہے۔” مزید کہا، "جو اہم ہے وہ تبادلہ کی شرح نہیں ہے ، لیکن مسابقت ہے۔”

ان کے یہ ریمارکس سی این این ترک کو ایک خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے سامنے آئے جب گزشتہ ہفتے ڈالر کے مقابلے میں لیرا ریکارڈ 7.37 کی کم ترین سطح پر آیا ہوا ہے۔

البیراک نے کہا کہ تمام معاشی اعدادوشمار یہ ظاہر کرتے ہیں کہ ہمارے بہتر اقدامات کی وجہ سے ترکی وباء کے بعد معیشت کو مضبوطی کے ساتھ بحال کیا ہے، انہوں نے مزید کہا کہ دوسری بڑی سہ ماہی کے مثبت نتائج کے کے بعد ہمارا ملک COVID-19 کی وبا سے پیدا ہونے والی عالمی کساد بازاری سے سب سے کم متاثر ہونے والوں ممالک میں شامل ہوگا۔

انہوں نے کہا، "جن لوگوں نے ترکی کے لئے 5 فیصد کساد بازاری کی پیش گوئی کی ہے وہ پھر غلطی سے دوچار ہوجائیں گے۔ ہماری پیش گوئی منفی 2 سے منفی 1 فیصد کے درمیان ہے جو کہ عالمی اوسط سے کہیں بہتر ہے،” انہوں نے مزید کہا کہ ترکی رواں سال اپنے بجٹ خسارے کو چھوڑ دے گا اور خسارہ جی ڈی پی کا لگ بھگ 5 سے 6 فیصد ہوگا۔

انہوں نےاس عمل کو "قومی آزادی کی جدوجہد” سے تشبیہ دیتے ہوئے کہا کہ ایک نیا اور آزاد معاشی نمونہ عمل میں لایا جارہا ہے۔

جمہوریہ ترکی کے مرکزی بینک (سی بی آر ٹی) نے گذشتہ ہفتے اپنی سال کے آخر میں افراط زر کی پیش گوئی کو 8.9 فیصد سے 7.4 فیصد کردی تھی۔ انہوں نے کہا کہ تیل کی قیمتوں اور خوراک کی افراط زر کے تخمینے میں 1.5 فیصد زیادتی کی وجہ سے افراط زر کو زیادہ پیش گوئی کی گئی تھی تاہم یہ فیکٹر اب تبدیل ہو رہے ہیں۔

تبصرے
Loading...