ترکی COVID-19 کے پھیلاؤ کو روکنے کے قریب پہنچنے والے چند ممالک میں سے ایک ہے، صدر ایردوان

0 2,016

صدارتی کابینہ کے اجلاس کے بعد قوم سے خطاب کرتے ہوئے صدر رجب طیب ایردوان نے کہا کہ ” یورپ اور امریکا کے مقابلے میں ترکی اُن ملکوں میں سے ایک ہے جو اس مرض کے پھیلاؤ کو روکنے کے قریب پہنچ گئے ہیں۔ ہم نے مشاہدہ کیا کہ ہر گزرتے دن کے ساتھ ہمارے شہری مجوزہ اقدامات پر بہتر انداز میں عمل کر رہے ہیں۔”

صدر رجب طیب ایردوان نے 25 ویں کابینہ اجلاس میں بذریعہ وڈیو کانفرنس کے بعد قوم سے خطاب کیا۔

"ہم نے سائنس کونسل کی تجاویز کے عین مطابق اقدامات اٹھائے”

صدر مملکت نے کہا کہ "ہم نے اس وبائی مرض کے آغاز سے ہی وزارتِ صحت کی سائنس کونسل کی تجاویز کے عین مطابق اقدامات اٹھائے اور اُن کا مکمل طور پر نفاذ کیا۔ ہمارا صحت کا نظام، عملہ، ادویات اور ساتھ ساتھ انتہائی نگہداشت کے لیے بستروں کی تعداد کے حوالے سے بھی کئی دوسروں ملکوں سے بہتر حالت میں ہے۔ ہم چہرے کے ماسک اور مرض کی تشخیص کے لیے کٹس سے لے کر مدافعتی نظام کو بہتر بنانے کے لیے چند ادویات تک ضروریات خود پوری کرنے کے قابل ہیں۔ ہم اب تک 27 ملین سرجیکل ماسکس، 30 لاکھ سے زیادہ N95 ماسکس، 10 لاکھ سے زیادہ حفاظتی سُوٹس اور پونے دو لاکھ سے زیادہ سیفٹی گلاسز اپنے ہسپتالوں اور ہیلتھ کیئر یونٹس کو فروخت کر چکے ہیں۔ ہم ان کی پیداوار کو مزید بڑھانے کی صلاحیت بھی رکھتے ہیں۔”

"وبائی حالات میں اہم ترین مسائل میں سے ایک اپنے صحت عامہ کے نظام کو برقرار رکھنا ہے”

صدر ایردوان نے کہا کہ ” یورپ اور امریکا کے مقابلے میں ترکی اُن ملکوں میں سے ایک ہے جو اس مرض کے پھیلاؤ کو روکنے کے قریب پہنچ گئے ہیں۔ ہم نے مشاہدہ کیا کہ ہر گزرتے دن کے ساتھ ہمارے شہری مجوزہ اقدامات پر بہتر انداز میں عمل کر رہے ہیں۔ وبائی صورت حال میں اہم ترین مسائل میں سے ایک اپنے صحت عامہ کے نظام کو برقرار رکھنا ہے۔ ہم COVID-19 کے خلاف جدوجہد میں اپنے صحت کے اداروں کے لیے جتنے افراد اور آلات مختص کریں گے، اس وبائی مرض سے اتنے ہی مؤثر انداز میں نمٹ سکیں گے۔ علاوہ ازیں، صحت عامہ کے ادارے اِن حالات میں خود وباء کا گڑھ بن سکتے ہیں۔ اس لیے میں اپنے شہریوں سے مطالبہ کرتا ہوں کہ جب تک واقعی ہنگامی صورت حال پیدا نہ ہو، ہسپتالو ں کا رُخ نہ کریں۔”

"اپنے علاوہ اپنے دوستوں کی ضروریات کو بھی پوری کرنے کی کوشش کریں گے”

صدر ایردوان نے یہ بھی کہا کہ "ہم اپنے دوستوں کی ضروریات بھی پوری کرنے کی کوشش کریں گے۔ اس ضمن میں ہم نے کئی ایسے ممالک میں صحت اور صفائی کی مصنوعات بھیجی ہیں کہ جنہیں مشکل حالات کا سامنا ہے۔ بدھ کو ایک ہوائی جہاز اسپین بھیجیں گے جو اس وبائی مرض سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والے ممالک میں سے ایک ہے۔ اسی طرح امدادی سامان سے لدا ہوا ایک بحری جہاز ہم نے اٹلی بھی بھیجا ہے جو اس وقت بہت سخت مرحلے سے گزر رہا ہے اور ہم آئندہ بھی ایسے ہی اقدامات اٹھاتے رہیں گے۔ ایسے دیگر ممالک بھی ہیں کہ جن کو ہم نے اپنا تیار کیا گیا سامان بھیجا ہے۔”

تبصرے
Loading...