اپریل کے بعد ترکی میں لاک ڈاؤن کے بغیر پہلا وِیک اینڈ

0 243

صدر رجب طیب ایردوان نے COVID-19 کی وجہ سے 15 شہروں میں ویک اینڈ یعنی اختتامِ ہفتہ پر لگائے گئے کرفیو کو ہٹانے کا حکم دے دیا ہے۔ یہ حکم وزارتِ داخلہ کی جانب سے نئے کرفیو کے اعلان کے چند گھنٹوں بعد دیا گیا۔

لاکھوں لوگ پُرامید تھے کہ گزشتہ ویک اینڈ کا کرفیو ملک میں آخری ہوگا کیونکہ پیر سے ملک بھر میں سفر اور کاروباروں پر عائد مختلف پابندیاں اٹھا دی گئی تھیں۔ لیکن وزارتِ داخلہ نے جمعرات کو 15 شہروں میں ہفتہ و اتوار کے دن ایک اور کرفیو کا حکم دے دیا۔

البتہ جمعے کو ایک ٹوئٹ میں اپنا فیصلہ سناتے ہوئے صدر ایردوان نے نے پیر سے شہروں میں کاروباروں کے کھلنے اور سفری پابندیوں کو "نیا معمول” قرار دیتے ہوئے کہا کہ "وہ نہیں چاہتے کہ شہری ڈھائی مہینے کے وقفے کے بعد روزمرہ اُمور دوبارہ شروع کریں اور دوسری مصیبت میں پھنس جائيں۔”

انہوں نے کہا کہ "درحقیقت، ہم اس ہفتے کرفیو نہ لگاتے لیکن روزانہ سامنے آنے والے مریضوں کی تعداد جو گھٹتے گھٹتے تقریباً 700 تک آ گئی تھی ایک مرتبہ پھر بڑھ کر 1,000 ہو گئی ہے اور ہمیں اسے ایجنڈے پر واپس لانا پڑا۔” صدر نے کہا کہ عوامی مطالبات نے انہیں "فیصلے پر نظرثانی” پر مجبور کیا۔ "یہ واضح ہے کہ یہ فیصلہ مختلف سماجی و معاشی نتائج کا باعث بنے گا۔”

دوسری جانب صدر نے عوام سے ایک مرتبہ پھر مطالبہ کیا ہے کہ وہ وباء سے بچنے کے اقدامات لازماً اٹھائیں خاص طور پر محفوظ ماسک کا استعمال، سماجی فاصلہ رکھنا اور صحت و صفائی کا خیال رکھنا وغیرہ۔

تبصرے
Loading...