ماحول دوست توانائی کے حصول کے لیے ترکی کی جانب سے نیوکلیئر پاور سے استفادہ

0 493

گزشتہ ایک دہائی میں ترکی کی نئی توانائی پالیسی کی توجہ توانائی کے وسائل اور اس کی فراہمی کے طریقوں کو متنوّع بنا کر توانائی کی فراہمی کو مضبوط بنانے پر رہی ہے۔

قابلِ تجدید توانائی میں بڑے پیمانے پر سرمایہ کاری کرتے ہوئے ترکی تنصیب شدہ قابلِ تجدید توانائی کی گنجائش بڑھانے کے لحاظ سے برطانیہ اور جرمنی کے بعد تیسرے نمبر پر ہے اور وِنڈ اور سولر پاور کی گنجائش میں 2023ء کے اہداف حاصل بھی کر چکا ہے۔ البتہ بجلی کی پیداوار، کہ جس کی طلب 2030ء تک دوگنی ہو جائے گی، میں صاف توانائی کا حصہ بڑھانے کے لیے ترکی نے گزشتہ سال بحیرۂ روم کے ساحل پر صوبہ مرسین میں پہلے نیوکلیئر پاور پلانٹ کے آغاز کا انتخاب کیا تھا۔

کیونکہ نیوکلیئر انرجی صاف بجلی پیدا کرنے میں اہم ہے، اس لیے ترکی صحت، صنعت، ٹرانسپورٹیشن، مواصلات اور ایروسپیس کے شعبوں میں نیوکلیئر ٹیکنالوجی سے فائدہ اٹھانے کا منصوبہ رکھتا ہے۔ بین الاقوامی توانائی ایجنسی (IEA) کے ایگزیکٹو ڈائریکٹر فاتح بیرول کے "صاف توانائی کے نظام میں نیوکلیئر طاقت” رپورٹ پیش کرنے کے موقع پر ملاقات میں وزیر توانائی و قدرتی وسائل فاتح دونمیز نے اشارہ کیا کہ ترکی ماحولیاتی پالیسیوں اور عمدہ ٹیکنالوجی کے حصول کے لیے نیوکلیئر توانائی کی اہمیت کو تسلیم کرتا ہے۔

ترکی کی بجلی طلب 2030ء تک دوگنی ہو کر 500 ٹیراواٹ آورز تک پہنچ جائے گی، وزیر نے کہا۔ ایک ابھرتی ہوئی معیشت کو بڑھتی ہوئی طلب پر بغیر تعطل کے بجلی کی فراہمی اور ماحولیاتی خدشات کو بھی مدنظر رکھنا چاہیے۔ "نیوکلیئر پاور بغیر کسی تعطل اور موسمیاتی حالات پر انحصار کے بجلی پیدا کرنے کے قابل ہے۔ اس لیے یہ قابلِ بھروسہ ہے، اسے پھیلایا بھی جا سکتا ہے اور یہ ماحول دوست بھی ہے۔” انہوں نے کہا۔

اپریل 2018ء میں ترکی نے روسی ادارے روسیٹم کے تعاون سے اپنے پہلے نیوکلیئر پاور پلانٹ، آق قویو، کی تعمیر کا آغاز کیا۔ یہ پلانٹ 4800 میگاواٹ کی گنجائش کے ساتھ چار ری ایکٹرز کا حامل ہوگا جن میں سے ہر ری ایکٹر1200 میگاواٹ پیدا کرے گا۔ 2023ء تک، جمہوریہ ترکی کے 100 سالہ جشن کے موقع پر، مکمل ہونے والا آق قویو نیوکلیئر پاور پلانٹ تقریباً 35 ارب کلوواٹ آورز بجلی سالانہ پیدا کرے گا۔ آق قویو 60 سال کی زندگی رکھتا ہے۔ ایک مرتبہ شروع ہونے کے بعد یہ پاور پلانٹ ترکی کی بجلی طلب کا تقریباً 10 فیصد پورا کرے گا، جو ترکی کے سب سے بڑے شہر استنبول کی بجلی کی ضروریات پورا کرنے کے برابر ہے۔

تبصرے
Loading...