ترکی میں غازیوں کا دن منایا گیا، ہیروز کو خراج تحسین

0 513

ترکی نے گزشتہ روز غازیوں کا دن منایا جو جنگ کے ہیروز اور دہشت گرد حملوں میں زخمی ہونے والوں کے اعزاز میں منایا جاتا ہے۔ صدر رجب طیب ایردوان نے اس موقع پر ایوانِ صدر میں غازیوں کے ایک گروپ کا استقبال کیا جبکہ اس موقع پر ہیروز کو خراج تحسین پیش کرنے کے لیے ملک بھر میں بھی سرگرمیوں کا انعقاد کیا گیا۔

غازیوں کا دن پہلی بار 19 ستمبر 1921ء کو منایا گیا تھا جس روز ملک کے کمانڈر اِن چیف مصطفیٰ کمال اتاترک کو ترک جنگِ آزادی میں کامیابی کے بعد پارلیمان کی جانب سے "غازی” کا لقب دیا گیا تھا۔ ترکی 18 مارچ کو یومِ شہداء بھی مناتا ہے۔ ترکی نے دوسری جنگِ عظیم سے اپنا دامن بچائے رکھا اور بین الاقوامی تنازعات میں حصہ لینے سے اجتناب کیا۔ آج ایسے بزرگ غازی بھی ہیں کہ جنہوں نے 1950ء میں کوریائی جنگ بھی لڑی۔ ملک نے 1970ء میں دہائی میں یونانی قبرص کی جارحیت کے خلاف ترک قبرصی باشندوں کی مدد کے لیے قبرص میں بھی دستے اتارے تھے۔ لیکن غازیوں کی سب سے بڑی تعداد دہائیوں سے جاری دہشت گردی کے خلاف ترکی کی جنگ سے آئی۔ سینکڑوں فوجی اور شہری جنوب مشرقی ترکی میں PKK کے دہشت گردوں کے ہاتھوں زخمی اور معذور ہوئے۔ غازیوں کی بڑی تعداد وہ بھی ہے جنہوں نے 15 جولائی 2016ء کو گولن دہشت گرد گروپ (FETO) کے باغی سپاہیوں کا مقابلہ کیا۔ تقریباً 2,200 افراد زخمی ہوئے جب FETO کے گھس بیٹھیے حکومت پر قبضہ کرنا چاہتے تھے۔ عوام کی زبردست مزاحمت نے اس کوشش کو ناکام بنا دیا۔

غازیوں کو ملک میں انتہائی عزت و احترام سے نوازا جاتا ہے۔ اس موقع پر وزارت خاندان، مزدور اور سماجی خدمات نے اعلان کیا کہ غازیوں اور شہیدوں کے رشتہ داروں سمیت 425 افراد کو سرکاری ملازمتیں دی گئیں۔ وزارت 8,508 غازیوں اور ان کے رشتہ داروں کو بھی ملازمتیں دے چکی ہے۔

وزیر محنت، سماجی خدمات و خاندان زہرا زمرد سلجوق نے کہا کہ حکومت ہمیشہ سے غازیوں اور شہداء کے خاندانوں کا خیال رکھتی ہے اور ان کی مدد کی پالیسیاں جاری رکھے گی۔ انہوں نے کہا کہ ماضی میں غازیوں اور شہداء کے اہل خانہ کو اُن کا پس منظر جانے بغیر ملازمتیں دی جاتی تھیں۔ اب ان میں موجود اساتذہ، نرسوں اور انجینئرز وغیرہ کو اپنی تعلیم کے مطابق ملازمتیں دی جا رہی ہیں۔

یہ دن سرکاری اداروں میں کام کرنے والے غازیوں اور ان کے اہل خانہ کے لیے چھٹی کا دن بھی ہوتا ہے۔ وزارت نے شہداء کے اہل خانہ اور غازیوں کے لیے ایک علیحدہ محکمہ بھی قائم کر رکھا ہے۔ اس کا عملہ غازیوں کی درخواستوں اور شکایات سنتا ہے اور انہیں مدد فراہم کرتا ہے۔ بچوں کے لیے تعلیم کے اخراجات، ماہانہ تنخواہ، سال میں ایک بار اضافی ادائیگی، ملازمت کے حقوق، سود سے پاک گھریلو قرضے، پبلک ٹرانسپورٹ پر مفت سفر، بلوں میں رعایت، کئی ٹیکسوں سے استثناء سمیت کئی سہولیات انہیں فراہم کی جاتی ہیں۔

تبصرے
Loading...