آیا صوفیا مسجد کی بحالی کے لیے تیاریاں عروج پر

0 226

86 سال تک عجائب گھر رہنے کے بعد استنبول کی آیا صوفیا جمعے سے ایک مرتبہ پھر مسجد بن جائے گی۔ اس تاریخی دن پر نہ صرف ترکی بلکہ دنیا بھر کے مسلمانوں میں خوشی کی ایک زبردست لہر ہے۔

اس قدیم عبادت گاہ کی ایک مرتبہ پھر مسجد کی حیثیت سے بحالی پر شہر استنبول میں بھی خاصا جوش و خروش موجود ہے اور شہری سماجی فاصلے اور اسلامی اصولوں کے مطابق اس مسجد کا شایانِ شان افتتاح کرنے کے لیے تیار ہیں۔

استنبول کے گورنر علی یارلی قایا نے جمعرات کو کہا ہے کہ ہمیں معلوم ہے کہ آیا صوفیا میں دہائیوں کے بعد پہلی نماز پڑھنے والے خواہشمندوں کی تعداد بہت زیادہ ہوگی اور وہ اس کے لیے وہ ضروری احتیاط کے ساتھ بھرپور انتظامات کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ سب لوگوں کے لیے نماز ممکن بنانے کے لیے عبادت گاہ کے دروازے صبح 10 بجے کھول دیے جائیں گے اور یہ اگلی صبح تک کھلی رہے گی۔ "وباء کی وجہ سے مسجد اور اردگرد پانچ مقامات عبادت کے لیے مختص کیے گئے ہیں جن میں سے دو خواتین کے لیے مخصوص ہیں۔” ان کا کہنا تھا کہ سب کے لیے اتنی جگہ موجود ہے کہ سماجی فاصلے کی خلاف ورزی کے بغیر باآسانی عبادت کی جا سکتی ہے۔

گورنر کے بیان کے مطابق سکیورٹی کے لیے 11 مختلف چیک پوائنٹس ہوں گے۔ "فوری اور آسان داخلے کے لیے ہم مہمانوں سے درخواست کرتے ہیں کہ وہ کوئی بستہ یا تھیلا وغیرہ نہ لائیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ بخار چیک کرنا اور ماسک پہننا لازمی ہوگا۔ رش زیادہ ہونے کی وجہ سے چند راستوں کو بند بھی کیا جائے گا۔

استنبول بلدیہ نے بھی اس اہم دن کے لیے اقدامات اٹھائے ہیں۔ مسجد کے لیے 25 شٹل بسیں فراہم کی جا رہی ہیں جو عوام کو مفت مسجد تک پہنچائیں گی جبکہ بلدیہ نے علاقے میں پارکنگ کو بھی مفت کر دیا ہے۔ اس کے علاوہ بلدیہ پانی کی 25,000 بوتلوں، ماسک، جراثیم کش اسپرے اور ڈسپوزیبل جائے نماز کی فراہمی بھی ممکن بنائے گی۔

آیاصوفیا ترکی میں مقامی اور غیر ملکی سیاحوں میں مقبول ترین مقامات میں سے ایک ہے۔ 1985ء میں جب یہ جگہ ایک عجائب گھر تھی، اسے اقوام متحدہ کی جانب سے عالمی ورثہ قرار دیا گیا۔

10 جولائی کو ترکی کی کونسل آف اسٹیٹ نے 1934ء کا وہ کابینہ کا حکم کالعدم قرار دے دیا جس کے تحت آیا صوفیا کو عجائب گھر میں تبدیل کر دیا گیا تھا۔ اس سے پہلے آیا صوفیا تقریباً 500 سال تک مسجد کی حیثیت سے استعمال ہوتی رہی تھی۔

اب آیا صوفیا مقامی اور غیر ملکی سیاحوں کے لیے مفت میں کھلی رہے گی۔

اس خاص نماز جمعہ میں صدر رجب طیب ایردوان کے علاوہ ترکی کے اہم سیاسی و عوامی رہنما بھی شرکت کریں گے۔ صدر نے مسجد کی بحالی کے لیے ہونے والے کام کا جائزہ لینے کے لیے بھی اچانک آیاصوفیا کا دورہ کیا تھا۔

تبصرے
Loading...