ترکی ہفتے میں 10 لاکھ ماسک تیار کر رہا ہے

0 278

وزیر دفاع نے کہا ہے کہ ترکی ہر ہفتے 10 لاکھ ماسک، 5,000 طبی لباس اور 5 ہزار لیٹر الکحل سے بنے جراثیم کش مائع کی پیداوار کر رہا ہے۔

خلوصی آقار نے مسلح افواج کے کمانڈر اِن چیفس کے ساتھ ایک ٹیلی کانفرنس میں کروناوائرس کی وباء کے خلاف احتیاطی اقدامات پر گفتگو کی۔ انہوں نے کہا کہ "ہم نے وزارت کے تمام شعبوں کو متحرک کر دای ہے تاکہ صدر رجب طیب ایردوان کی زیر قیادت اس جنگ کو جیت سکیں۔”

انہوں نے کہا کہ یکم مارچ سے اب تک 650 عملے کے اراکین بیرونِ ملک سے آ چکے ہیں اور انہیں قرنطینہ میں رکھا گیا ہے۔ ان میں سے 84 اب بھی زیرِ نگرانی ہیں۔

آقار نے کہا کہ ترکی اٹلی اور اسپین اور امداد دے چکا ہے، جو یورپ میں جدید کروناوائرس سے سب سے زیادہ متاثر ہونے والے ملک ہیں۔

جمعے کو استنبول اور انقرہ کی بلدیات نے اعلان کیا تھا کہ ماسک نہ پہننے والے افراد کو ماس ٹرانزٹ استعمال نہیں کرنے دی جائے گی۔ ترکی نے جدید کروناوائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے دیگر اقدمات بھی اٹھائے جیسا کہ اسکولوں کی بندش، 50 قصبہ جات کو قرنطینہ بنانا اور 65 سال اس سے زیادہ کے افراد پر 24 گھنٹے کا کرفیو لگانا وغیرہ۔

ملک میں اب تک کروناوائرس کے 20,921 مریض سامنے آ چکے ہیں جبکہ ہلاکتوں کی تعداد اس وقت 425 ہے۔ کل 484 افراد اب تک صحت یاب ہو چکے ہیں۔

گزشتہ سال دسمبر میں چین کے شہر ووہان میں منظرِ عام پر آنے والا جدید کروناوائرس اب تک کم از کم 181 ممالک اور خطوں تک پھیل چکا ہے۔

امریکا کی جان ہوپ کنز یونیورسٹی کے اعداد و شمار ظاہر کرتے ہیں کہ دنیا بھر میں یہ وباء 11 لاکھ افراد تک پھیل چکی ہیں اور تقریباً 59 ہزار اموات کا سبب بنی ہے۔ اب تک 2 لاکھ 25 ہزار سے زیادہ افراد صحت یاب ہو چکے ہیں۔

تبصرے
Loading...