ترکی نے چار 400-S دفاعی نظام خریدے، سی ای او روس ٹیک

0 17,991

روس کی سرکاری دفاعی کمپنی روس ٹیک کے چیف ایگزیکٹیو آفیسر نے بدھ کے روز ایک انٹرویو میں انکشاف کیا کہ ترکی نے روس سے چار S-400 میزائل دفاعی نظام خریدے۔

روس ٹیک کے چیف ایگزیکٹیو آفیسر سرگئی چیمزوو نے روسی روزنامہ "کومرسانٹ” کو بتایا کہ ترکی نے یہ دفاعی نظام 2.5بلین ڈالر میں خریدے۔ انہوں نے اس ڈیل سے متعلق انقرہ اور ماسکو کے درمیان مالیاتی تفصیلات بارے گزشتہ خبروں کی بھی تصدیق کر دی۔

ان کے مطابق صرف حتمی دستاویزات کی توثیق باقی ہے اور دونوں ممالک کی وزارت ہائے خارجہ اس ضمن میں بات چیت مکمل کر چکی ہیں۔

چیمزوو نے بتایا کہ معاہدے کے تحت ترکی کل رقم کا 45 فیصد حصہ کی پیشگی ادائیگی کرنے کا پابند ہے جبکہ بقایا رقم روس کے منافع فنڈ سے ادھار لی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ مارچ 2020 تک پہلا میزائل دفاعی نظام ترکی کے سپرد کرنے کی منصوبہ بندی کر لی گئی ہے۔

ترکی کے ساتھ S-400 کی تجارت کے فوائد بتاتے ہوئے چیمزوو نے انکشاف کیا کہ ترکی روس سے یہ دفاعی نظام خریدنے والا پہلا نیٹو ممبر ملک ہے۔

ترکی نے ستمبر میں روس سے دو S-400میزائل دفاعی نظام خریدنے پر آمادگی کا اظہار کیا تھا۔ یہ روس کا جدید ترین دور تک مار کرنیوالا جنگی طیارہ شکن دفاعی نظام ہے۔

بطور نیٹو ممبر ملک، ترکی کے اس سودے پر بہت سے نیٹو ممالک نے اپنے تحفظات کا اظہار کیا تھا لیکن نیٹو کے سیکرٹری جنرل سٹولٹن برگ نے 19ستمبر کو ان تمام افواہوں کا جواب دیتے ہوئے کہا تھا کہ تمام ممبر ممالک کو اپنے حربی آلات کی خرید سے متعلق آزاد فیصلے کرنے کا کلی اختیار حاصل ہے۔

ترکی کے نیٹو رکنیت چھوڑنے کے متعلق افواہوں کو یکسر مسترد کرتے ہوئے ترک حکام نے واضح کیا کہ اس ڈیل کے مقاصد سیاسی نہیں بلکہ یہ خالصتا ترکی کے دفاعی نظام کو مضبوط کرنے کی ایک کاوش ہے۔

یاد رہے کہ 5 بلین ڈالر کی رقم سے روس کا یہ دفاعی نظام S-400 بھارت بھی خرید چکا ہے اور اسے پاکستانی سرحد کے قریب نصب کیا جائے گا۔

تبصرے
Loading...