ترکی نے نیتن یاہو کے عزائم پر اسلامی ممالک کو بلا لیا، جدہ میں اجلاس ہو گا

0 2,057

ترکی کی وزارت خارجہ نے ہفتے کے روز کہا ہے کہ اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) اتوار کے روز ایک غیر معمولی اجلاس کرے گی جس میں اسرائیل کے مغربی کنارے کے علاقوں کو منسلک کرنے کے اپنے ارادے کے اعلان پر تبادلہ خیال کیا جائے گا۔

اسرائیل کے وزیر اعظم نیتن یاھو نے منگل کے روز کہا تھا کہ وہ فلسطینی علاقوں اور وادیِ اردن میں بکھرے ہوئے غیر قانونی بستیوں کو ، جن پر اسرائیل نے سن 1967 میں قبضہ کیا تھا اور وادی اردن کو اسرائیل میں شامل کر لیں گے، اور فلسطینی آئندہ کی ریاست کا حصہ بننا چاہتے ہیں۔

مشرق وسطی کی اقوام اور یورپی طاقتوں نے اس منصوبے پر خطرے کا اظہار کیا ہے ، جس پر نتن یاہو نے کہا تھا کہ اگر وہ اگلے ہفتہ قریب سے الیکشن جیتا ہے تو وہ اس پر عمل درآمد کروائے گا۔

عرب وزرائے خارجہ نے بھی منگل کے روز اس منصوبے کی "جارحیت” کی مذمت کی ہے جس سے فلسطینیوں کے ساتھ امن سمجھوتے کے کسی بھی امکان کو کم کیا جاتا ہے۔

ایک بیان میں ، ترکی کی وزارت خارجہ کی وزارت نے کہا کہ او آئی سی جدہ میں ملاقات کرے گی، "اسرائیل کے ذریعہ وادی اردن کو وابستہ کرنے کے ارادے پر نیتن یاھو کے بیانات اور اسرائیل کے ذریعہ مغربی کنارے میں غیر قانونی بستیوں پر تبادلہ خیال کریں گے۔”

اس اجلاس میں وزیر خارجہ میولوت چاوش اوغلو ترکی کی نمائندگی کریں گے۔ اسرائیلی انسانی حقوق کی تنظیم بی اسٹیلم کے مطابق ، وادی اردن اور شمالی بحیرہ مردہ کے علاقے میں قریب 65،000 فلسطینی اور 11،000 اسرائیلی آباد کار رہتے ہیں۔ فلسطین کا مرکزی شہر جیریکو ہے ، جہاں تقریبا 28 دیہات اور کم بیڈوین کمیونٹیاں ہیں۔

تبصرے
Loading...