کروناوائرس کے خلاف جنگ، ترکی کی لاطینی امریکا کے لیے طبّی امداد

0 239

ترکی نے کروناوائرس کی عالمی وباء کے خلاف جنگ میں مدد لاطینی امریکا کے ممالک برازیل اور پیراگوئے کو طبّی امداد بھیجی ہے۔

ترکی کے مقامی طور پر تیار کردہ 650 رسپائریٹرز کی شپمنٹ اتوار کو برازیل کے شہر ساؤ پاؤلو پہنچی۔

ترکی کے وزیر صنعت و ٹیکنالوجی مصطفیٰ وارانک نے اس کی ڈلیوری کی وڈیو ٹوئٹر پر شیئر کی۔ ان کا کہنا ہے کہ ترک کے آئی سی یو رسپائریٹرز "دنیا کے لیے سکون کا سائنس” بن چکے ہیں۔

برازیل کے مقامی میڈیا کے مطابق 650 رسپائریٹرز ترکی سے منگوائے گئے 1500 رسپائریٹرز میں شامل ہیں کہ جو ہسپتالوں میں تقسیم کیے جائیں گے۔

پیراگوئے کے سفیر نے کہا ہے کہ ترکی پیراگوئے کو طبی امداد بھیج رہا ہے تاکہ لاطینی امریکا کا یہ ملک کروناوائرس کی وباء کے خلاف جنگ لڑ سکے۔

یہ اعلان دونوں ممالک کے درمیان صحت کے شعبے میں تعاون کے معاہدے پر دستخط کے بعد کیا گیا ہے۔ اس معاہدے کو ترکی اور پیراگوئے کے درمیان "بہترین تعلقات کا عکاس” قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس معاہدے پر دستخط ان کے ملک کے مطالبے کے بعد ہوئے تھے۔

طبی امداد میں 50 ہزار حفاظتی لباس، 30 ہزار N95 ماسک، 1 لاکھ سرجیکل ماسک، 2 ہزار حفاظتی چشمے اور جوتوں کے لیے 50 ہزار حفاظتی کوَرز شامل ہیں۔

شپمنٹ ساؤ پاؤلو، برازیل کے ذریعے بھیجی گئی تھی اور جلد ہی پیراگوئے پہنچ جائے گی۔

دنیا کے کئی حصوں میں COVID-19 کے پھیلاؤ میں کمی آنے کے باوجود یہ وائرس لاطینی امریکا کے خطے میں تیزی سے پھیل رہا ہے۔

برازیل اس وقت COVID-19 سے دوسرا سب سے زیادہ متاثرہ ملک ہے، جہاں اب تک 6,72,846 تصدیق شدہ کیسز سامنے آ چکے ہیں اور تقریباً 36 ہزار اموات ہوئی ہیں۔

پیراگوئے میں 1,135 تصدیق شدہ کیسز ہیں اور 11 اموات ہوئی ہیں۔ 575 افراد صحت یاب بھی ہوئے ہیں۔

کیونکہ اس وائرس سے متاثر افراد کو سانس لینے میں دشواری ہوتی ہے اس لیے مکینیکل وینٹی لیٹرز کی ضرورت دنیا بھر میں بڑھ گئی ہے۔

ایک ایسے وقت میں جب تمام ممالک نے خود کو بچانے کی حکمتِ عملی اپنائی، ترکی نے ماسک، دستانوں اور حفاظتی سازوسامان کے ذریعے دیگر ملکوں کی مدد کی۔ ترکی اب تک دنیا بھر کے 80 ممالک کو مدد فراہم کر چکا ہے۔

پچھلے دسمبر میں چین کے شہر ووہان سے نکلنے والا یہ وائرس اب تک 188 ممالک اور خطوں تک پھیل چکا ہے۔

دنیا بھر میں اس وائرس سے اب تک 4,02,000 افراد مارے جا چکے ہیں جبکہ تقریباً 70 لاکھ شکار ہوئے۔

تبصرے
Loading...