ترکی یونان کے ساتھ فوجی مذاکرات کے منصوبے کی حمایت کرتا ہے، وزیرِ دفاع

0 155

ترکی کے وزیر دفاع نے کہا ہے کہ ترک صدر اور NATO کے سربراہ کے مابین ملاقات کے بعد ترکی یونان کے فوجی حکام کے ساتھ مذاکرات کے منصوبے کی حمایت کرتا ہے۔

انقرہ میں نیشنل ڈیفنس یونیورسٹی کی گریجویشن تقریب سے خطاب کرتے ہوئے خلوصی آقار نے کہا کہ "صدر رجب طیب ایردوان اور نیٹو سیکریٹری جنرل جینس سٹولٹن برگ کے مابین ملاقات کے بعد مشرقی بحیرۂ روم میں ترکی اور یونان کے فوجی حکام کے مطابق مذاکرات شروع کرنے کا ایک منصوبہ پیش کیا گیا ہے، جس کی ہم حمایت کرتے ہیں۔”

سٹولٹن برگ نے جمعرات کو اعلان کیا تھا کہ ترکی اور یونان نے مشرقی بحیرۂ روم میں کسی ناخوشگوار واقعے یا حادثے کے خطرے کو کم کرنے کے لیے NATO میں تکنیکی مذاکرات پر رضامندی ظاہر کی ہے۔

یونان خطے میں ترکی کی تیل و گیس تلاش کرنے کی موجودہ سرگرمیوں پر تنازع کھڑا کر رہا ہے، جو ترک ساحل کے قریب واقع چھوٹے جزیروں کو بنیاد بناتے ہوئے ترکی کی بحری سرحدوں کو محدود کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔

بحیرۂ روم کے ساتھ طویل ترین ساحلی پٹی رکھنے والے ترکی نے اپنے براعظمی کنارے (continental shelf) میں توانائی ذخائر کی تلاش کے لیے ڈرل شپ بھیجے ہیں اور کہا ہے کہ اس علاقے پر ترکی اور ترک جمہوریہ شمالی قبرص کا بھی حق ہے۔

ترک حکام کا کہنا ہے کہ ان قدرتی وسائل کی برابری کی بنیاد پر تقسیم پر مذاکرات سب کے لیے بہتر ہوگا۔

تبصرے
Loading...