ترکی مشرقی بحیرۂ روم میں تیل و قدرتی گیس کے ذخائر کی تلاش تیز کرے گا

0 105

ترکی کے وزیر توانائی و قدرتی وسائل نے کہا ہے کہ ملک میں اور مشرقی بحیرۂ روم میں تیل و گیس کے ذخائر کی تلاش کو تیز تر کیا جائے گا

مشرقی بحیرۂ روم میں تیل و گیس کی جامع و طویل المیعاد تلاش اور ڈرلنگ سرگرمیاں ترک جمہوریہ شمالی قبرص کی جانب سے لائسنس یافتہ علاقے میں موجود قانونی حقوق اور ترک کی جانب سے قبرصی باشندوں کے تحفظ پر بغیر کسی سودے بازی کے جاری رہیں گے، فاتح دونمیز نے کہا جو وزارت کے 2020ء بجٹ منصوبوں کے حوالے سے ترک پارلیمان کی منصوبہ بندی و بجٹ کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کر رہے تھے۔

ترکی، ترک جمہوریہ شمالی قبرص کی ضامن ریاست کی حیثیت سے، اس وقت مشرقی بحیرۂ روم میں دو بحری جہازوں، فاتح اور یاوُز، کے ذریعے تیل و گیس کے ذخائر کی تلاش کر رہا ہے جس میں عروج رئیس اور باربروس خیر الدین پاشا بحری جہاز بھی اسی خطے میں موجود ہیں۔

گہرے سمندروں میں تیل و گیس کی تلاش نے سہ جہتی سیسمک ڈیٹا کے بعد رفتار پکڑی ہے کہ جو مشرقی بحیرۂ روم میں اب تک 37 ہزار کلومیٹر کے علاقے کا جائزہ لے چکے ہیں، جن کا نتیجہ 2020ء میں بذریعہ بحری جہاز پانچ کنوؤں کی کھدائی کے منصوبے کی صورت میں نکلا ہے۔

دونمیز نے کہا کہ بین الاقوامی طور پر تسلیم شدہ اداروں کی رپورٹس کے مطابق مشرقی بحیرۂ روم کے طاس میں قدرتی گیس کے وسیع ذخائر موجود ہیں اور زور دیا کہ تلاش کی سرگرمیاں بین الاقوامی قوانین کے مطابق ہیں۔ انہوں نے 2019ء کے پہلے نو مہینوں میں وزارت کی جانب سے کیے گئے کام کا جائزہ پیش کیا کہ ترکی نے 117 تیل کی تلاش اور پیداوار کے کنویں کھولے اور کل 2,50,000 میٹر کی کھدائی کی۔

اس کا نتیجہ زبردست ذخائر رکھنے والے علاقوں میں تلاش، کھدائی اور پیداوار کی صورت میں نکلا تھا اور تھریس میں قدرتی ذخائر کے تقریباً 3 ارب مکعب میٹرز کے ذخائر ملے۔

اس دریافت کے ساتھ یہ ممکن ہوگا کہ اگلے 10 سالوں تک تقریباً 3 لاکھ گھروں کی توانائی ضروریات کو پورا کرنے میں مدد کے لیے 300 ملین مکعب میٹرز گیس کی پیداوار تک پہنچا جائے۔ جنوب مشرقی اناطولیہ میں کھدائی کا کام تیزکیا جائے گا اور مشرقی بحیرۂ روم میں گیس کے ذخائر بھی ابتدائی رپورٹوں کے مطابق حوصلہ افزاء ہیں۔

اجلاس سے قبل خطاب کرتے ہوئے دونمیز نے صحافیوں کو بتایا کہ ترکی اور جمہوریہ شمالی قبرص کے درمیان ایک زیرِ آب بجلی کی کیبل اور قدرتی گیس پائپ لائن کی تعمیر کے لیے کام جاری ہے۔

انہوں نے یہ بھی بتایا کہ ٹرانس اناطولین نیچرل گیس پائپ لائن (TANAP) کے یورپ لنک کی افتتاحی تقریب ہفتہ 30 نومبر کو ہوگی۔ TANAP منصوبہ جون 2018ء میں باضابطہ طور پر شروع کیا گیا تھا اور تب سے اکتوبر کے اختتام تک تقریباً 3.18 ارب مکعب میٹر گیس آذربائیجان کی شاہ دینز-2 آئل فیلڈ سے ترکی منتقل ہو چکی ہے۔ یہ پائپ لائن ترک-جارجیا سرحد سے ترک-یونانی سرحد تک پھیلی ہوئی ہے تاکہ ترکی اور یورپی ممالک کو قدرتی گیس فراہم کر سکے۔ تقریباً 8 ارب روپے کی لاگت سے TANAP سالانہ آذربائیجان کی 6 ارب مکعب میٹر گیس ترکی اور 10 ارب مکعب میٹر یورپ کو فراہم کی جائے گی۔ 1850 کلومیٹرز طویل پائپ لائن سدرن گیس کوریڈور کے 3500 کلومیٹرز طویل سیکشن کا حصہ ہے، جس کا افتتاح 29 مئی کو باکو میں ہوا تھا۔

دونمیز نے ترکی کے نیوکلیئر پاور پلانٹس کے منصوبوں پر بھی بات کی۔ ملک کا پہلا پلانٹ جنوبی ترکی کا آق قویو نیوکلیئر پاور پلانٹ منصوبے کے مطابق 2023ء میں کام کرنا شروع کردے گا، یعنی اسی سال جب ترک جمہوریہ کو 100 سال مکمل ہو جائیں گے۔ انہوں نے تصدیق کی کہ شمالی ترکی میں سنوپ نیوکلیئر پاور پلانٹ پروجیکٹ کی صورت میں ملک کے دوسرے پلانٹ کے اہم شراکت دار جاپان نے فزیبلٹی اسٹڈیز کر لی ہیں۔ البتہ انہوں نے واضح کیا کہ فزیبلٹی رپورٹ کے مطابق یہ منصوبہ بہت طویل اور مہنگا ہوگا۔ انہوں نے بتایا کہ تیسرے پلانٹ کے لیے سروے جاری ہے۔

تبصرے
Loading...