مشرقی بحیرۂ روم میں ترکی کے اقدامات بین الاقوامی قوانین کے مطابق ہیں، وزیرِ دفاع

0 258

انقرہ نے کہا ہے کہ بحیرۂ ایجیئن، مشرقی بحیرۂ روم اور قبرص پر موجود تنازعات کو بین الاقوامی قوانین کے مطابق حل کرنا چاہیے۔

وزیر دفاع خلوصی آقار نے شامی سرحد کے قریب بری، فضائی اور بحری افواج کے کمانڈروں کے ساتھ ملاقات کے بعد کہا ہے کہ "آئیے پڑوسیوں کے ساتھ اچھے تعلقات کے ذریعے، باہمی خیر سگالی اور ایک دوسرے کے حقوق کی خلاف ورزی نہ کرتے ہوئے تمام مسائل حل کریں۔”

آقار نے مزید کہا کہ ترک وفود نے اپنے ہم منصبوں سے ملاقات کے لیے دو مرتبہ ایتھنز کا دورہ کیا، اور یونانی حکام کو مزید ملاقاتوں کے لیے انقرہ مدعو کیا۔

ترک اور یونانی وزارت ہائے دفاع کے وفود نے فروری میں اختلافات کو حل کرنے کے لیے اعتماد کی بحالی کے حامل کچھ اقدامات اٹھائے تھے۔ ترکی اور یونان کے مابین تعلقات میں حالیہ چند مہینوں میں مزید کشیدگی آئی ہے جس کی وجہ مہاجرین کے بڑھتے ہوئے بوجھ اور مشرقی بحیرۂ روم میں وتیل و گیس کے ذخائر کی تلاش ہیں۔

آقار نے کہا کہ ترک مسلح افواج ترکی اور ترک عوام کے مفادات کا تحفظ کریں گی۔

تبصرے
Loading...