ترکی کی قدرتی گیس کی درآمدات میں 15.2 فیصد کا اضافہ

0 345

ترکی نے رواں سال اکتوبر میں گزشتہ سال کے اسی مہینے کے مقابلے میں 15.2 فیصد زیادہ قدرتی گیس درآمد کی ہے۔

انرجی مارکیٹ ریگولیٹری اتھارٹی (EPDK) نے اپنی ماہانہ رپورٹ میں بتایا ہے کہ قدرتی گیس کی درآمد اکتوبر 2020ء کی 4.04 ارب مکعب میٹرز (bcm) کے مقابلے میں حالیہ اکتوبر میں 4.65 ارب مکعب میٹرز رہی۔

اکتوبر میں ملک نے پائپ لائنوں کے ذریعے 3.02 ارب مکعب میٹرز گیس درآمد کی جبکہ 16.3 لاکھ مکعب میٹرز گیس ایل این جی کے طور پر خریدی گئی۔ یوں پائپ لائن کے ذریعے درآمد میں 6.9 فیصد کمی اور ایل این جی درآمداتت میں 105.5 فیصد کا اضافہ دیکھنے کو ملا۔

گیس درآمدات کے لیے روس ترکی کا سب سے اہم شراکت دار ہے جس نے 1.86 ارب مکعب میٹرز گیس فراہم کی جبکہ امریکا اور آذربائیجان 838 اور 762 ملین مکعب میٹرز کے ساتھ بالترتیب دوسرے اور تیسرے نمبر پر رہے۔

اکتوبر میں ترکی کی روس اور آذربائیجان سے گیس درآمدات میں بالترتیب 8.8 اور 30.9 فیصد کی کمی آئی جبکہ امریکا سے درآمدات میں 2020ء کے اسی مہینے کے مقابلے میں 748 فیصد کا اضافہ دیکھا گیا۔

ترکی کی کل گیس کھپت میں بھی 23.5 فیصد کا اضافہ ہوا ہے جو 4.42 ارب مکعب میٹرز تک جا پہنچی ہیں۔

گھریلو کھپت اکتوبر 2020ء کے مقابلے میں 31.5 فیصد بڑھ کر 505 ملین مکعب میٹرز تک پہنچی جبکہ بجلی گھروں میں گیس کا استعمال بھی 24.2 فیصد بڑھ کر 1.80 ارب مکعب میٹرز ہو گیا۔

قدرتی گیس سے چلنے والے بجلی گھروں میں کھپت میں اضافہ دراصل خشک سالی کی وجہ سے پن بجلی کی گنجائش گھٹ جانے کی بدولت ہوا ہے جو گیس درآمدات بڑھنے کی ایک اہم وجہ ہے۔

اکتوبر 2021ء میں محفوظ قدرتی گیس کے حجم میں 15.9 فیصد کمی آئی جو 2.74 ارب مکعب میٹرز ہو گئے ہیں جبکہ گزشتہ سال ستمبر میں یہ 3.25 ارب مکعب میٹرز تھے۔

تبصرے
Loading...
%d bloggers like this: