ترکی، قدرتی گیس کی خریداری میں ایک تہائی اضافہ

0 47

تر کی کی قدرتی گیس کی خریداری جولائی کے مہینے میں گزشتہ سال کے اسی مہینے کے مقابلے میں 30.1 فیصد اضافے کے ساتھ 4.05 ارب مکعب میٹر تک پہنچ گئی ہے۔ انرجی مارکیٹ ریگولیٹر اتھارٹی (EPDK) نے اپنی ماہانہ قدرتی گیس مارکیٹ رپورٹ میں کہا ہے کہ جولائی 2020ء میں یہ درآمد 3.1 ارب مکعب میٹر تھی۔

رپورٹ کے مطابق ترکی نے پائپ لائنوں کے ذریعے 3.48 ارب مکعب میٹر درآمد کی جبکہ 56.8 کروڑ مکعب میٹر لیکوئیفائیڈ نیچرل گیس (LNG) کی صورت میں خریدی گئی ۔ یہ پائپ لائن سے گیس کی درآمدات میں 33.7 فیصد اور ایل این جی کی درآمد میں 11.8 فیصد کے سالانہ اضافے کو ظاہر کرتی ہے۔

اس مہینے روس ترکی کو گیس درآمد کرنے والا سب سے بڑا ملک رہا، جس نے 2.30 ارب مکعب میٹر قدرتی گیس فراہم کی جبکہ ایران اور الجزائر 63.3 کروڑ مکعب میٹر اور 56.8 کروڑ مکعب میٹر کے ساتھ اس کے پیچھے رہے۔

ترکی کی کُل گیس کھپت میں ایک سال میں 35 فیصد کا اضافہ دیکھنے میں آیا ہے جو تقریباً 3.83 ارب مکعب میٹر تک جا پہنچی ہے۔

ایک نیا سنگِ میل، بحیرۂ اسود کی گیس کا شعلہ بھڑک اٹھا

ملک کی گھریلو گیس کھپت میں 4.6 فیصد کی کمی آئی ہے جو 23.9 کروڑ مکعب میٹر رہ گئی ہے جبکہ پاور پلانٹس میں گیس کا استعمال 72.5 فیصد بڑھ کر 1.93 ارب مکعب میٹر تک جا پہنچا ہے۔

قدرتی گیس سے چلنے والے پاور پلانٹس میں کھپت بڑھنے سے درآمدات میں بڑا اضافہ بھی دیکھنے میں آیا۔ ان پلانٹس کو خشک سالی اور پن بجلی کی صلاحیت میں کمی آنے کی وجہ سے زیادہ بجلی بنانی پڑی۔

قدرتی گیس سے چلنے والے پلانٹس کا بجلی کی کُل پیداوار میں حصہ جولائی میں 37.2 فیصد تھا، جبکہ گزشتہ سال کے اسی مہینے میں یہ 24.5 فیصد تھا۔

قدرتی گیس کے ذخیروں کا حجم جولائی میں 31.1 فیصد بڑھ کر 2.79 ارب مکعب میٹر رہا، جو جولائی 2020ء میں تقریباً 2.1 ارب مکعب میٹر تھا۔

ترک اسٹریم پائپ لائن سے سربیا کو گیس کی پہلی بار فراہمی

دوسری جانب ملک کی تیل کی درآمدات میں سالانہ بنیادوں پر 1.3 فیصد کی کمی آئی ہے جو جولائی ملین 42.9 لاکھ ٹن ہو گئی۔

خام تیل کی درآمد، جو ملک میں تیل کی درآمدات میں سب سے بڑا حصہ رکھتی ہے، میں جولائی میں 3 فیصد کی کمی آئی اور یہ 30.6 لاکھ ٹن ر گئی۔

جولائی میں ترکی نے سب سے زیادہ تیل اور تیل کی مصنوعات عراق سے درآمد کیں، جو 12.3 لاکھ ٹن رہیں۔ روس اور قزاقستان 10.8 لاکھ ٹن اور 5.75 لاکھ ٹن کے ساتھ بالترتیب اگلے نمبروں پر رہے۔

تبصرے
Loading...