پاموق قلعہ کی نظریں 2020ء میں 10 لاکھ سیاحوں پر

0 258

سیاحوں میں بہت مقبول ترکی میں واقع قدرت کا شاہکار پاموق قلعہ اگلے چھ مہینوں میں تقریباً 10 لاکھ سیاحوں کی توجہ حاصل کرنے کی امید رکھتا ہے کیونکہ کروناوائرس کی عالمی وباء کے خاتمے کے لیے لگائی گئی پابندیاں اٹھا کر اب حالات معمول پر لائے جا رہے ہیں۔

پاموق قلعہ اقوام متحدہ کے ادارے یونیسکو کی جانب سے عالمی ثقافتی ورثہ قرار دیا گیا ہے جو اپنے معدنی پانیوں اور سفید چونے کے پتھروں سے بنے چبوتروں کی وجہ سے مشہور ہے، ترکی کے صوبہ دینزلی میں واقع ہے۔

سیاحت اور ہوٹل مینجمنٹ کے حوالے سے مقامی ایسوسی ایشن کے صدر غازی مراد شین نے کہا ہے کہ پاموق قلعہ کڑے حفاظتی انتظامات کے ساتھ کھل چکا ہے تاکہ اس وباء کو مزید پھیلنے سے روکا جا سکے اور مہمانوں کو حفظانِ صحت کے اعلیٰ ترین معیارات فراہم کیے جا سکیں۔

ترکی نے covid-19 کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے لگائی گئی پابندیاں یکم جون سے مرحلہ وار اٹھانا شروع کر دی ہیں۔ اب تک چائے خانے، ریستوران، ساحل، باغات اور ایسے ہی مقامات کو کھلنے کی اجازت دی جا چکی ہے۔

مراد شین نے کہا کہ COVID-19 کے خلاف اقدامات ہوٹلوں میں سب سے زیادہ ہیں۔ ہم نہیں سمجھتے کہ ایسے انتظامات کے بعد کروناوائرس کے کیس سامنے آئیں گے۔

ہوٹل سال کے اختتام تک اس "سفید جنت” میں تقریباً 10 لاکھ مہمانوں کی آمد کی تیاری کر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ تقریباً نصف غیر ملکی سیاحوں کی آمد مشرقِ بعید سے متوقع ہے، جیسے ہی بیرونِ ملک پروازوں کا آغاز ہوگا، مہمان کی آمد بھی شروع ہو جائے گی۔ حالات کو معمول پر لانے کے عمل کے ساتھ ہی پاموق قلعہ کے ہوٹل چین، جنوبی کوریا، ملائیشیا، انڈونیشیا، جاپان اور روس سے تقریباً 6 لاکھ مہمانوں کی آمد کی توقع لگائے بیٹھے ہیں۔

یہاں کے قدرتی چشمے سیاحوں میں بہت مقبول ہیں۔ سال بھر 36 درجہ سینٹی گریڈ کا درجہ حرارت رکھنے والے یہاں کے چشموں کے بارے میں سمجھا جاتا ہے کہ یہ امراضِ قلب، گھٹیا، جلدی اور اعصابی امراض کے ساتھ ساتھ پیٹ کی خرابی میں بھی شفا رکھتے ہیں۔

ترکی میں مقامی پروازیں شروع ہو چکی ہیں۔ ملک میں اب تک 1,70,132 میں سے 1,37,969 مریض صحت یاب ہو چکے ہیں۔ ترکی نے 23.3 لاکھ COVID-19 ٹیسٹ کیے اوراس دوران مرنے والوں کی تعداد 4,692 رہی۔

گزشتہ سال دسمبر میں چین کے شہر ووہان میں منظر عام پر آنے والا کروناوائرس اب تک تقریباً 188 ممالک اور خطوں تک پھیل چکا ہے۔ امریکا، برازیل، روس اور متعدد یورپی ممالک اس وقت کروناوائرس سے سب سے زیادہ متاثر ہیں۔

یہ عالمی وباء اب تک دنیا بھر میں 4,03,000 افراد کو موت کے گھاٹ اتار چکی ہے جبکہ 70 لاکھ سے زیادہ تصدیق شدہ مریض سامنے آئے ہیں اور ساڑھے 31 لاکھ صحت یاب ہوئے ہیں۔

تبصرے
Loading...