جرمنی میں ترک-جرمن کلچرل ایسوسی ایشن پر تیزاب سے حملہ

0 309

جرمنی کے شمالی مغربی صوبے ویسٹ فالیا میں "انادولو” نامی ترک-جرمن ثقافتی و امدادی تنظیم کے دفتر پر تیزاب سے حملہ کیا گیا ہے۔

منگل کو بتایا گیا ہے کہ دفتر کے بیرونی علاقے میں جمعے کی دوپہر ناگوار بو کا احساس ہوا لیکن ہفتے کی دوپہر جاکر اس حملے کی تصدیق ہوئی۔

ایسوسی ایشن کے اراکین نے شدید بو کی وجہ سے فائر ڈپارٹمنٹ کو فوراً اطلاع دی۔ پھر ایک کمرے سے متعدد کنٹینرز برآمد ہوئے کہ جن سے بُو نکل رہی تھی۔ بتایا جاتا ہے کہ ان کنٹینرز میں بترک تیزاب (butyric acid) تھا، جو کھڑکی میں سے اندر پھینکے گئے تھے۔

مقامی پولیس نے علاقے کو سِیل کر دیا ہے۔ اور علاقے کے سرکاری اداروں نے تحقیقات شروع کر دی ہے۔

تیزاب کی صفائی ماہرین کی جانب سے چاہیے کیونکہ بترک تیزاب کے بخارات سانس میں جانے کے بعد ہوا کے داخلی راستوں کو بری طرح متاثر کر سکتے ہیں اور قے، متلی اور دیگر علامات کا سبب بن سکتے ہیں۔ علاقہ صفائی کا عمل مکمل ہونے تک بند رہے گا۔

اس حملے کے بعد مقامی ترک برادری سخت پریشان ہے۔ مقامی مسجد کو بھی خبردار کر دای گیا ہے۔

تحفظِ آئین کے لیے وفاقی دفتر (BfV) کے مطابق جرمنی میں دائیں بازو کے تقریباً 12,700 شدت پسند رہتے ہیں۔ ایک حالیہ سروے میں پتہ چلا کہ حکومت اس مسئلے کو حل کرنے کے لیے بہت کم اقدامات اٹھا رہی ہے۔ نتیجتاً مسلمانوں اور تارکینِ وطن کے خلاف نسل پرستانہ حملے بڑھتے ہی جا رہے ہیں۔

تبصرے
Loading...