ترکی نے شامی جنگی طیارہ مار گرایا

0 330

ترکی کے ایک ایف-16 طیارے نے شمال مغربی شامی صوبہ ادلب میں مراۃ النعمان کے قریب ایک شامی جنگی طیارے کو مار گرایا

قومی وزارتِ دفاع نے ایک بیان میں بتایا ہے کہ L-39 جنگی طیارہ شامی حکومت کا تھا کہ جسے ترک افواج نے مار گرایا ہے۔

ترکی افواج شبانہ روز آپریشن کو جاری رکھے ہوئے ہیں اور ایک جنگی طیارے، ایک ڈرون، چھ ٹینکوں، پانچ توپوں، دو ایئر ڈیفنس سسٹمز، تین بکتر بند گاڑیوں، پانچ تکنیکی، چھ فوجی گاڑیوں اور ایک اسلحہ ڈپو کو تباہ کر چکی ہیں اور شامی حکومت کے 327 فوجیوں کو ٹھکانے لگا چکی ہیں۔

ترکی نے ادلب میں شامی حکومت کے ایک فضائی حملے میں 34 ترک فوجیوں کی شہادت کے بعد اتوار سے آپریشن اسپرنگ شیلڈ کا آغاز کیا ہے۔ یہ حملہ ترکی کی جنوبی سرحد کے ساتھ شمال مغربی شام کے de-escalation زون میں کیا گیا تھا۔ ترک وزیر دفاع خلوصی آقار کا کہنا ہے کہ اس آپریشن کے دوران ترکی کا واحد ہدف ادلب میں اسد حکومت کے فوجی اور ان کے جنگی آلات ہیں۔

ترکی فوجی ستمبر 2018ء میں روس کے ساتھ ہونے والے معاہدے کے تحت مقامی شہریوں کی حفاظت کرتے ہوئے شہید ہوئے، یہ معاہدہ ادلب میں جارحانہ کارروائی سے منع کرتا ہے۔

لیکن اس علاقے میں شام اور روس کے حملوں میں 1,300 سے زیادہ شہری مارے جا چکے ہیں، سیز فائر کی خلاف ورزی بدستور جاری ہے جس کی وجہ سے دس لاکھ سے زیادہ فوجی شام سے ملحقہ ترکی کی سرحد کی طرف بڑھ رہے ہیں۔

تبصرے
Loading...