ترکی میں پابندیاں نرم پڑنے لگیں، مالز، ہیئرڈریسرز اور بیوٹی پارلرز کھولنے کی اجازت

0 265

جدید کروناوائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لیے لگائی گئی پابندیوں کو مرحلہ وار ختم کرتے ہوئے پیر سے ترکی بھر میں شاپنگ مالز، ہیئر ڈریسرز اور بیوٹی پارلرز تقریباً دو مہینے بند رہنے کے بعد کھل گئے ہیں۔

کسی بھی مال یا سیلون میں داخل ہونے سے پہلے بخار چیک کرنا اور ماسک پہننا ضروری ہے۔

مال میں جانے والے افراد کی تعداد بھی محدود رکھی جا رہی ہے، جبکہ مختلف مقامات پر سینی ٹائزرز کی موجودگی اور سماجی فاصلے رکھنے کے حوالے سے پیغامات آویزاں کرنا ضروری ہے۔

شاپنگ سینٹرز اینڈ انوسٹرز ایسوسی ایشن کے سربراہ حسین آلتاش نے کہا کہ مالز کی بڑی تعداد پیر سے کام کرنا شروع ہو گئی ہے، اور وہ حالات معمول پر لانے کے لیے تیار ہیں۔
اس آغاز کو ایک آزمائشی قرار دیتے ہوئےآلتاش نے کہا کہ "ہمارے بیشتر مالز کھلے ہیں لیکن دکانداروں کی بڑی اکثریت یکم جون تک تیاریاں کرے گی۔” انہوں نے کہا کہ یہ ایک احتیاطی اور جزوی آغاز ہے۔ "میرے خیال میں صارفین کی آمد تقریباً 30 فیصد رہے گی اور آمدنی 50 فیصد۔”

شاپنگ مالز کو 21 مارچ کو بند کرنے کا اعلان کیا گیا تھا، اور اب وہ عید سے دو ہفتے پہلے کھل رہے ہیں، جو عام طور پر خریداری کا سیزن ہوتا ہے۔

کونسل آف شاپنگ سینٹر نے کہا ہے کہ کام کرنے والے اور خریدار دونوں ماسک پہنے رہیں اور سماجی فاصلہ رکھیں۔ مال انتظامیہ بخار چیک کرنے کے لیے انتظام کرے، برقی سیڑھیوں پر رش کم کرے یا ان کا استعمال محدود کرے، جراثیم کش اسپرے فراہم کرے۔ دکانوں کو بھی کہا جا رہا ہے کہ وہ نقد رقوم کے بجائے ادائیگی کے دیگر طریقوں کی حوصلہ افزائی کرے۔

تبصرے
Loading...