ترک فوجی ماہرین نے نگورنو-قاراباخ میں بارودی سرنگیں صاف کرنے کا کام شروع کر دیا

0 280

ترکی کی وزارت دفاع نے کہا ہے کہ اس کی اسپیشل مائن ڈٹیکشن اینڈ کلیئرنس ٹیم (OMAT) نے آرمینیا کے قبضے سے آزاد کرائے گئے علاقے نگورنو-قاراباخ میں بارودی سرنگوں کو صاف کرنے کا کام شروع کر دیا ہے.

اپنی ویب سائٹ پر جاری کردہ بیان میں وزارت نے کہا ہے کہ "آذربائیجان کی بہادر افواج کی جانب سے آرمینیا کے قبضے سے چھڑائے گئے قاراباخ کے علاقوں میں اب بارودی سرنگوں اور دھماکا خیز مواد کی صفائی کا کام جاری ہے۔”

خصوصی ترک دستے آذربائیجانی فوجیوں کو بارودی سرنگوں کا پتہ چلانے اور ان کی صفائی کی تکنیک کی تربیت بھی دے رہے ہیں۔

ترک فوج نے لیبیا میں اقوام متحدہ کی تسلیم شدہ حکومت (GNA) کی درخواست پر بھی باغی جرنیل خلیفہ حفتر کے دستوں کی جانب سے بچھائی گئی بارودی سرنگیں صاف کرنے میں مدد دی ہے۔

سابق سوویت ریاستوں آذربائیجان اور آرمینیا کے مابین تعلقات 1991ء سے کشیدہ ہیں، جب آرمینیا کی فوج نے نگورنو-قاراباخ پر قبضہ کر لیا تھا کہ جو عالمی سطح پر آذربائیجان کا تسلیم شدہ حصہ ہے۔

دونوں ملکوں کے درمیان حالیہ کشیدگی 27 ستمبر کو شروع ہوئی، جب آرمینیا کی فوج نے آذربائیجان کے شہریوں اور دستوں پر حملے شروع کر دیے اور سیزفائر کے کئی معاہدوں کی خلاف ورزی کی۔

44 روزہ جنگ کے دوران آذربائیجان نے علاقے کے کئی شہر اور تقریباً 300 قصبے اور دیہات آزاد کروائے۔

یہاں تک کہ دونوں ممالک نے 10 نومبر کو لڑائی کے خاتمے اور ایک جامع حل کی جانب پیشرفت کے لیے روس کی ثالثی میں ایک معاہدے پر دستخط کیے۔

تبصرے
Loading...