ترقی کے ترک ماڈل نے فلسطین کو اپنے پاؤں پر کھڑا کر دیا

0 1,617

اسرائیلی جبر و ستم سہنے والی فلسطینی قوم کی مدد کے لیے ترک ادارہ برائے تعاون و امداد باہمی (تیکا) امدادی سرگرمیوں میں پیش پیش ہے۔

ترکی کی اس سرکاری فلاحی ادارے کی جانب سے فلسطین میں 2005ء سے 2018ء تک کل 543 امدادی اور ترقیاتی منصوبے چلائے جا رہے ہیں جو محاصرے میں فلسطینیوں کو زندہ رہنے اور اپنے پاؤں پر کھڑا ہونے کے مواقع دیتے ہیں۔ یہ بات فلسطین میں تیکا کے ڈائریکٹر بولنت کورکماس نے بتائی۔

کورکماس کے بقول یہ سب "ترکی کے ترقیاتی ماڈل” کا نفاذ ہے۔ انہوں نے امداد اور انسانی فلاحی امداد میں فرق بتاتے ہوئے کہا کہ اکثر ممالک کی امداد نو آبادیاتی اپروچ کے تحت ہوتی ہے جو امداد حاصل کرنے والوں کا استحصال کرتے ہیں۔

ترکی فلاحی ادارے تیکا نے 2005ء میں فلسطین میں اپنا پہلا دفتر کھولا، تب سے مغربی کنارے میں 332، بیت المقدس میں 81 اور غزہ کی پٹی میں 130 منصوبے شروع کئے گئے ہیں۔ یہ انسانی منصوبے تعلیم سے صحت اور صاف پانی کی فراہمی سے غرباء تک خوراک کے پیکج پہنچانے تک شامل ہیں، اس کے علاوہ تاریخی مقامات کی بحالی بھی ان منصوبوں میں شامل ہے۔

اس کے بعد غزہ میں 180 بیڈ پر مشتمل ایک جدید ہسپتال کھولا گیا اور حال ہی میں تیکا کے زیر انتظام 320 اپارٹمنٹس ےعمیر کئے گئے ہیں جو خطے کے متاثرہ خاندانوں میں تقسیم کئے جائیں گے۔

 

تبصرے
Loading...