ترک پولیس ہنگری کے سرحدی دستوں کی مدد کرے گی

0 2,115

ترک پولس ہنگری کی سربیا اور رومانیہ سے ملنے والی سرحدوں پر خدمات انجام دے گی، جس کا اعلان ترک وزیر داخلہ سلیمان سوئیلو نے کیا ہے۔

دونوں ممالک کے مابین ہونے والے معاہدے کے تحت ترکی کے 50 پولیس افسران ہنگری میں تعینات کیے جائیں گے۔ یہ اہلکار غیر قانونی تارکینِ وطن، منشیات کی اسمگلنگ اور سرحد پار جرائم کو روکنے کی کوششوں میں ہاتھ بٹائیں گے۔

سلیمان سوئیلو ہنگری کے دارالحکومت بوڈاپسٹ میں موجود ہیں، جہاں انہوں نے اپنے ہم منصب سندور پنتر سے ملاقات کی۔ دونوں نے وفود کی سطح پر ہونے والے ایک اجلاس میں بھی شرکت کی۔

ملاقاتوں کے بعد مشترکہ نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے سلیمان سوئیلو نے کہا کہ انہوں نے مفاہمت کی ایک اہم یادداشت پر بھی دستخط کیے ہیں جو 11 نومبر کو ترک دارالحکومت میں ہونے والی اعلیٰ سطحی تزویراتی تعاون کونسل کے معاہدے کا ایک حصہ ہے۔ یہ معاہدہ کونسل کے اجلاس میں ہوا تھا جس میں صدر رجب طیب ایردوان اور ہنگری کے وزیر اعظم وکٹر اوربن نے شرکت کی تھی۔

وبا، غیر قانونی ترکِ وطن اور توانائی کے معاملات کو عالمی سطح کے مسائل قرار دیتے ہوئے سلیمان سوئیلو نے کہا کہ ان مسائل کے ساتھ ساتھ علاقائی معاملات بھی ہم سب کو تشویش کا باعث ہیں۔ بد قسمتی سے ہم سرحد پار جرائم مثلاً دہشت گردی، غیر قانونی منشیات اور سائبر کرائم جیسے گمبھیر عالمی مسائل کا سامنا بھی کر رہے ہیں۔ ان سے نمٹنے کے لیے جن اہم ترین اقدامات کی ہمیں ضرورت ہے، اس میں سے ایک علاقائی و بین الاقوامی تعاون ہے۔

سلیمان سوئیلو نے کہا کہ ترک اور ہنگری کی پولیس غیر قانونی تارکینِ وطن، منشیات اور سرحد پار جرائم کو روکنے کے لیے مشترکہ منصوبے پر کام کرے گی۔

پنتر، جو ہنگری کے نائب وزیر اعظم بھی ہیں، نے کہا کہ وہ ترکی کی پیشکش پر اس کے شکر گزار ہیں اور اسے قبول کرتے ہیں۔

تبصرے
Loading...
%d bloggers like this: