قونیا: ترکوں کا مقبوضہ کشمیر کی عوام سے یکجہتی کا غیرمتزلزل اعادہ

0 1,155

قونیا: سیلچُکلو بلدیہ کی یوتھ پارلیمنٹ "سیلچُکلو مجلسِ نوجواناں” اور پاکستانی سفارت خانہ نے مشترکہ طور پر "کشمیر بلیک ڈے” سیمینار کا انعقاد کیا جس میں مقبوضہ جموں و کشمیر کے مظلوم عوام سے یکجہتی کا اظہار کیا گیا اور ان کے جمہوری حق خود ارادیت کی بھرپور حمایت کی گئی-

سیمینار میں چیئرمین ترکی پاکستان فرینڈشپ گروپ اور ترک پارلیمنٹرین علی شاہین، انقرہ میں پاکستانی سفیر سیرس قاضی، ڈپٹی گورنر قونیا محمدت آیدن، سیلچُکلو میونسپلٹی قونیا کے ڈپٹی میئر علی ضیا یلچن کایا، سیلچُکلو مجلس نوجواناں کے کشمیری ورکنگ گروپ کے صدر احمت سمیت توکدمیر اور یوتھ پارلیمنٹرین کے علاوہ بڑی تعداد میں نوجوانوں اور میڈیا نمائندگان موجود تھے-

ترک پارلیمنٹرین علی شاہین نے اپنے کلیدی خطاب میں کشمیری عوام کی حمایت کا اعادہ کیا- انہوں نے کہا کہ ترکی مقبوضہ جموں و کشمیر اور فلسطین سمیت دنیا کے ہر خطے میں مظلوم لوگوں کی حمایت کرتا ہے- انہوں نے کہا کہ ترک حمایت صرف بلیک ڈے پر ہی نہیں بلکہ مسئلہ جموں و کشمیر کے حل تک جاری رہے گی-

سیلچُکلو مجلس نوجواناں کے کشمیر ورکنگ گروپ کے صدر نے اپنے گروپ کی سرگرمیوں بارے حاضرین کو آگاہ کیا- انہوں نے کشمیر میں بھارت کی طرف سے ہونے والے مظالم کی مذمت کی اور ترکی میں کشمیر بارے آگاہی مہم جاری رکھنے کا عزم دوہرایا- انہوں نے مزید کہا کہ ترک عوام مسئلہ کشمیر کے حل تک اپنی حمایت جاری رکھیں گے-

ترکی کی پر عزم حمایت کی داد دیتے ہوئے پاکستانی سفیر سیرس سجاد قاضی نے کہا کہ کشمیر بلیک ڈے پر اتنی بڑی تعداد میں نوجوانوں کی شرکت، اس عظیم مقصد سے ترکی کے پائیدار عزم و یکجہتی کا اظہار ہے- انہوں نے حاضرین کو کشمیر میں ہونے والے بھارتی مظالم بارے بتاتے ہوئے کہا کہ بھارت 1989ء سے اب تک 95000 سے زائد کشمیریوں کو قتل کر چکا ہے- 8 جولائی 2016ء کو کشمیری نوجوان برہان وانی کی شہادت نے کشمیری جدوجہد آزادی میں نئی روح پھونک دی ہے- بڑی سے بڑی ظالمانہ قوت بھی کشمیری عوام کے اس عزم کو نہیں توڑ سکتی-

انہوں نے مزید کہا کہ کشمیری عوام کو اپنا حق خود ارادیت مانگنے کی سزا دی جا رہی ہے- اقوام متحدہ کی قرار دادیں انہیں خود ارادیت کا جمہوری حق دیتی ہیں- عالمی برادری ان قرار دادوں پر عمل کروانے میں ناکام ہو چکی ہے-

پاکستانی سفیر نے اعادہ کیا کہ پاکستان کشمیری عوام کی سیاسی، سفارتی اور اخلاقی حمایت جاری رکھے گا- انہوں نے ترکوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ ہماری باہمی کاوشیں عالمی ضمیر کو جھنجھوڑنے میں مدد دیں گی اور مقبوضہ جموں و کشمیر کے عوام کی آزادی، امید اور امن کا راستہ کھولیں گی-

سیمینار کے اختتام پر ترک سفیر سیرس سجاد قاضی نے قونیا میں پڑھنے والے پاکستانی طلباء سے بات چیت کی- انہوں نے کہا پاکستان کے بہت کم سچے دوست ممالک ہیں جن میں ترکی سب سے اچھا دوست ہے- انہوں نے پاکستانی طلباء کو کہا کہ آپ ترکی میں پاکستان کے سفیر ہیں، آپ نے ہی ترک لوگوں کے سامنے پاکستان کی نمائندگی کرنا ہے-

تبصرے
Loading...