اقوامِ متحدہ نے ترکی لیبیا بحری حدود کے معاہدے کی تصدیق کر دی

0 147

اقوام متحدہ نے ترکی اور لیبیا کے مابین بحری حدود کے تعین کے معاہدے کی تصدیق کر دی ہے کہ جو مشرقی بحیرۂ روم کے علاقوں کا احاطہ کرتا ہے۔

معاہدہ اقوام متحدہ کے چارٹر کے آرٹیکل 102 کے مطابق سیکریٹریٹ میں رجسٹر کر لیا گیا ہے۔

آرٹیکل 102 کہتا ہے کہ ہر معاہدہ اور ہر بین الاقوامی معاہدہ جو اقوام متحدہ کے کسی بھی رکن کی جانب سے کیا جائے سیکریٹریٹ میں رجسٹر ہونے اور اس کی اشاعت کے بعد ہی لاگو ہوگا۔

27 نومبر 2019ء کو انقرہ اور طرابلس نے مفاہمت کی دو یادداشتوں پر دستخط کیے تھے، ایک عسکری تعاون اور دوسرا مشرقی بحیرۂ روم میں سرحدی حدود کے تعین کے حوالے سے۔

ترکی اور لیبیا کی جانب سے بحری حدود کے تعین کے معاہدے نے علاقائی ریاستوں کی کسی بھی حرکت سے بچنے کے لیے ایک قانونی ڈھانچہ فراہم کیا۔ اسی طرح یونان کی حکومت کی جانب سے لیبیا کے براعظمی کنارے (CONTINENTAL SHELF) کا بڑا حصہ ہتھیانے کی کوشش بھی ناکام بنا دی گئی۔

یہ معاہدہ ترکی اور لیبیا کے بحری پڑوسی بننے کی بھی تصدیق کرتا ہے۔ حدود کا تعین ترکی کے جنوب مغرب میں فاتحیہ-مرمارش-کاش کے ساحل سے شروع ہوتا ہے اور لیبیا کی ساحلی پٹی کے ساتھ درنہ-تبروک-بوردیا تک پھیلا ہوا ہے۔

بحری حدود کے تعین کا معاہدہ جزیرہ کریٹ کے جنوب مشرق میں ترکی کے اپنے خصوصی اقتصادی زون (EEZ) کے حقوق کو بھی تسلیم کرتا ہے اور یوں بحیرۂ روم میں ملک کے EEZ کو محدود کرنے کی غیر قانونی کوششوں کا خاتمہ کرتا ہے۔

تبصرے
Loading...