اسرائیل کی غزہ میں خونریزی نے اقوام متحدہ کو "زمین بوس” کر دیا ہے، ایردوان

0 1,080

رجب طیب ایردوان نے بدھ کے روز کہا ہے کہ اقوام متحدہ غزہ کے واقعات میں "زمین بوس” ہو گئی ہے جہاں اسرائیلی فوج نے 60 سے زائد فلسطینی مظاہرین کو شہید کر دیا ہے اور امریکہ نے اپنا سفارت خانہ بیت المقدس منتقل کیا ہے۔

صدارتی کمپلیکس میں شہداء کے خاندانوں کے اعزاز میں پہلی افطار پارٹی سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ انقرہ اقوام متحدہ کی رکن ریاستوں کو متحرک ہونے پر زور دے رہا ہے اور ترک آرمی چیف اور وزارت خارجہ غزہ کے زخمیوں کو ترکی لانے کے کام میں مصروف ہیں۔

رجب طیب ایردوان نے کہا، "ان واقعات کے نتیجے میں اقوام متحدہ کا خاتمہ ہو چکا ہے۔ یہ فرسودہ اور زمین بوس ہو چکی ہے”۔ انہوں نے مزید کہا، "اب اگر اسرائیل کی بدمعاشی کے مقابلے میں خاموشی رہی تو دنیا تیزی سے انتشار کی طرف لڑھک جائے گی جہاں تشدد اور ٹھگی ہی چلے گی”۔

انہوں نے کہا، "اس موقع پر میں اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل سے اچھی دوستی کے باوجود رابطہ نہیں کر سکتا”۔

ترکی اسرائیل کو فلسطینیوں سے بیت المقدس چوری کرنے کی اجازت نہیں دے گا، یہ کہتے ہوئے رجب طیب ایردوان نے بتایا کہ وہ اپنی فون ڈپلومیسی جاری رکھیں گے۔

ترک صدر نے مزید کہا، "ہم تب تک اپنے بھائیوں کی جدوجہد کی حمایت کریں گے جب تک فلسطینی سر زمین ۔۔۔ جو ایک طویل عرصے سے غاصبانہ قبضے میں ہے۔۔۔۔ وہاں امن اور دفاع کے ساتھ آزاد فلسطینی ریاست کی سرحدیں محفوظ نہیں ہو جاتیں”۔

انہوں نے بین الاقوامی برادری پر اسرائیلی حملوں سے نمٹنے میں ناکامی کا الزام عائد کیا اور کہا کہ اگر کسی دوسری جگہوں پر ایسی ہلاکتیں ہوئیں تو بین الاقوامی ادارے بہت کچھ کر چکے ہوتے”۔

ایردوان نے کہا۔ "یہاں تک کہ اگر پوری دنیا اپنی آنکھیں بند کر لے ہم اسرائیلی بربریت کو روکنے کی کوشش کرتے رہیں گے۔ ہم صرف قلبی ہی نہیں، اپنے تمام ممکن ذرائع سے اپنے فلسطینی بھائی بہنوں کا ساتھ دیں گے”۔ انہوں نے کہا کہ چاہے اس کی کوئی قیمت ہو وہ فلسطین کے ساتھ کھڑے ہیں۔

تبصرے
Loading...