جو جنگی میدانوں میں ہمیں شکست نہیں دے سکتے وہ ہماری جڑوں پر حملے جاری رکھے ہوئے ہیں، ایردوان

0 1,244

ترک صدر رجب طیب ایردوان نے آق پارٹی اناطالیہ کی صوبائی کانگریس میں ترکی کے اندر اور باہر ترک قوم کی زندگی کی رگوں کو کاٹنے کی مہمات کی طرف توجہ دلاتے ہوئے کہا، "جو جنگی میدانوں میں ہمیں شکست نہیں دے سکتے یا ہمیں جسمانی اور روحانی طور پر ناکام نہیں بنا سکتے، تاحال وہ ہماری جڑوں پر حملے جاری رکھے ہوئے ہیں۔ فتح اللہ گولن دہشتگرد تنظیم ایسی آستین کا سانپ ہے جو گذشتہ چالیس سال سے ہماری قوم کو غلط طریقے سے استعمال کرتی آئی ہے اور ہماری ریاست اور معاشرے میں مذہبی، خیرات، خدمت، احسانات وغیرہ کے نام پر نفوز ہو کر حملہ آور تھی”۔

ہمارے دشمن ہماری زندگیوں کی بہار کو خزاں بنانے کے لیے کام کر رہے ہیں

ترکی کے لوگ آباؤاجداد کے وہ بیٹے ہیں جن کی جنگ کے میدانوں سے "اللہ اللہ” کی گونج پوری دنیا میں سنائی دیتی ہے۔ اور اس قوم سے ہیں جوبیت المقدس، مکہ اور مدینہ کے احترام اور خدمت کو اپنے لیے اعزاز سمجھتے ہیں۔  انہوں نے کہا، "جیسا کہ ہم اپنی اس طاقت بارے آگاہ ہیں اور وہ بھی جیسے ہمارے دشمن ہیں۔ جیسا کہ ہم اپنی زندگی کی بہاروں کو محفوظ بنانے کی کوشش کرتے ہیں، اسی طرح وہ ان بہاروں کو خزائیں بنانے کے لیے کام کر رہے ہیں”۔

القاعدہ اور داعش کا ہدف ہمیشہ مسلمان رہے ہیں

القاعدہ اور داعش کے خونی گینگز کی طرف توجہ دلاتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ ان عالمی منصوبوں کے آلات اور ہتھیار ایک جیسے ہیں۔ اور ان دہتشگرد تنظیموں کا ہدف صرف مسلمان ہی ہیں۔ یہ تنظیمیں صرف مسلمان کا ہی خون بہاتی ہیں۔

 

تبصرے
Loading...