اگر ہم ایک ہوجائیں تو ہمارے جغرافیے میں بوئے جانے والے بغاوت کے بیج نمو نہیں ہو سکیں گے، ایردوان

0 671

سبِ عروس کے موقع پر قونیا میں ترک صدر ایردوان نے مولانا رومی کی برسی پر کہا: "قتل گاہوں اور جبر و استبداد کے منصوبہ سازی کرنے والے اور وہ جنہوں نے معصوموں کا خون بہایا نہ صرف اس دنیا میں بلکہ آنے والے وقت پر بھی وہ اس کا حساب دیں گے اس ملک کے اندر سے اور نہ بیرون ملک سے کوئی اس قوم کو زیر کر سکتا ہے جو اپنے آپ کو اللہ کے حوالے کر چکی ہے۔ اگر ہم ایک اور متحد ہو جائیں تو ہمارے جغرافیے میں بوئے جانے والی غداری کے بیج نمو نہیں پا سکیں گے”۔

مولانا رومی کی برسی پر "وقتِ اخوت” کے نام سے قونیا میں خصوصی نشت رکھی گئی جس میں صدر رجب طیب ایردوان نے شرکت کی۔

ہمیں اسلامی تہذیب کے مبادی اور حضرت مولانا کی تعلیمات کا درست فہم ضرور رکھنا چاہیے

انہوں نے کہا: "یہ پیار اور عقیدہ تھا جس نے الپ ارسلان کے لیے اناطولیہ کے دروازے کھول دئیے۔ جس نے صلاح الدین کے لیے القدس کے دروازے کھول دئیے اور سلطان محمد فاتح کے لیے استنبول کے دروازے کھول دئیے۔ جس نے بھی محبت کا طریقہ اپنایا اس نے پہلے دل و دماغ فتح کئے۔ اس مشکل اور مصائب کے جس دور سے ہم گزر رہے ہیں، میرا یقین ہے کہ ہمیں اسلامی تہذیب کے مبادی اور حضرت مولانا کی تعلیمات کا درست فہم ضرور رکھنا چاہیے”۔

اگر ہم مضبوطی سے جمے رہیں تو علیحدگی کی ہوائیں ہمیں نہیں اکھاڑ سکتیں

جب ہماری قوم اخوت اور بھائی چارے کو برقرار رکھتی ہے اور اپنا کھانا پینا مجبوروں اور محکوموں کے ساتھ بانٹ کر کھاتی ہے کوئی اس قوم کو گرا نہیں سکتا۔ صدر ایردوان نے کہا: "علیحدگی کی ہواؤں کا مقصد نسلی اور مسلکی بنیادوں پر غداری کے بیج بو کر ہماری گہری اقدار کو کمزور کرنا ہے۔ اگر ہم مضبوطی کے ساتھ جمے رہیں تو یہ ہمیں نہیں ہلا سکتیں”۔

تبصرے
Loading...