ترکی اور روس کے درمیان بغیر ویزے کے سفر کا آغاز

0 1,253

ویزا کے بغیر روس اور ترکی کے درمیان سفر آج سے شروع ہو رہا ہے، ترک وزارت خارجہ نے ایک بیان میں کہا۔

یہ قدم سرکاری اور سروس پاسپورٹ رکھنے والوں کے علاوہ بین الاقوامی ٹرانسپورٹ چلانے والوں کے لیے بھی ہوگا۔ اس میں ترک اسپیشل پاسپورٹ رکھنے والے بھی شامل ہیں۔

"ویزا سے استثنیٰ کے معاہدے پر 12 مئی 2010ء کو دستخط ہوئے تھے، جسے 7 اگست 2019ء کو جزوی طور پر لاگو کیا گیا ہے۔ ہم معاہدے کے مکمل اطلاق کی توقع رکھتے ہیں۔” بیان میں مزید کہا گیا۔

روس نے 2015ء میں بغیر ویزے کے نظام کا خاتمہ کردیا تھا جب ترک-شام سرحد پر ایک روسی طیارے کو مار گرانے کے بعد دونوں ملکوں کے درمیان تناؤ پیدا ہو گیا تھا۔

اس جولائی میں روسی صدر ولادیمر پوتن نے وزارت خارجہ کو حکم دیا کہ وہ بغیر ویزے کے سفر کی عارضی بحالی کے لیے ترک حکام کو اطلاع دیں۔

"ترک شہریوں کو ویزے کے بغیر سفر کرنے کی اجازت دینے کے لیے اٹھایا گیا روسی قدم پرجوش تعلقات اور مذاکرات کا نتیجہ ہے،” صدر رجب طیب ایردوان نے روسی فیصلے کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا۔

سرکاری اور سروس پاسپورٹ رکھنے والوں کے لیے بغیر ویزے کے سفر کو استنبول ایئرپورٹ سے روس کا سفر کرنے والے مسافروں نے بھی سراہا ہے۔

روس جانے والی ترک ایئرلائنز کے ایک مسافر سرتان آقائے نے کہا کہ انہیں نئے ویزا نظام کی بہت خوشی ہے کیونکہ وہ روس کا سفر زیادہ کرتے ہیں۔ "بغیر ویزے کے نظام کی توسیع میں عام پاسپورٹس کی شمولیت تجارتی تعلقات اور کاروباری افراد کے لیے بہت اہمیت کی حامل ہے۔ یہ نیا قدم ترک کاروباری افراد کے لیے بہت امید افزاء ہے۔”

ایک ترک ایکسپورٹر دنچر آتش نے روس کے ساتھ وسیع اقتصادی تعلقات میں اس نئے نظام کی اہمیت پر زور دیا۔

تبصرے
Loading...