ہم ترکی اور تُرکوں کے لیے خطرے بننے والا ہر قدم روکیں گے، صدر ایردوان

0 121

صدر رجب طیب ایردوان نے کہا ہے کہ "ہم چاہے میدانِ جنگ میں ہوں یا مذاکرات کی میز پر، اُن تمام اقدامات کو روکیں گے جو ہمارے ملک اور عوام کے مستقبل کے لیے خطرہ بنیں گے۔ وہ جب بھی دہشت گردوں کو چھوڑیں گے، ہم اُن کا خاتمہ کریں گے۔ جب وہ ہمیں سرحدوں پر ہراساں کریں گے تو ہم اُن دھمکیوں کے پیچھے موجود اسباب تک پہنچیں گے۔ جب وہ ہماری معیشت پر حملہ آور ہوں گے، ہم تیزی سے بحال ہوں گے اور اپنے راستے پر سفر جاری رکھیں گے۔ جب وہ ہمیں عالمی سطح پر دیوار سے لگانے کی کوشش کریں گے، ہم اپنی دوستیاں بحال کرکے ان کے منصوبوں کو ناکام بنائیں گے۔”

وہ انقرہ میں انصاف و ترقی (آق) پارٹی کے صوبائی سربراہان کے اجلاس سے خطاب کر رہے تھے۔

صدر ایردوان نے کہا کہ "ہم چاہے میدانِ جنگ میں ہوں یا مذاکرات کی میز پر، اُن تمام اقدامات کو روکیں گے جو ہمارے ملک اور عوام کے مستقبل کے لیے خطرہ بنیں گے۔ وہ جب بھی دہشت گردوں کو چھوڑیں گے، ہم اُن کا خاتمہ کریں گے۔ جب وہ ہمیں سرحدوں پر ہراساں کریں گے تو ہم اُن دھمکیوں کے پیچھے موجود اسباب تک پہنچیں گے۔ جب وہ ہماری معیشت پر حملہ آور ہوں گے، ہم تیزی سے بحال ہوں گے اور اپنے راستے پر سفر جاری رکھیں گے۔ جب وہ ہمیں عالمی سطح پر دیوار سے لگانے کی کوشش کریں گے، ہم اپنی دوستیاں بحال کرکے ان کے منصوبوں کو ناکام بنائیں گے۔”

شام، عراق، مشرقی بحیرۂ روم میں، مہاجرین کے مسائل اور دیگر کئی شعبوں میں گزشتہ چند سالوں میں حاصل کردہ نتائج کو کامیابی کی داستانیں قرار دیتے ہوئے صدر نے کہا کہ "جنہوں نے اِن معاملات پر ترکی کو جھکانے کے منصوبے بنائے، ہماری کامیابی پر اپنی حیرت کو چھپا نہیں پائے۔ ہمارے ملک اور عوام سے عداوت رکھنے والوں کو حیران کرنا ہمارے لیے باعثِ فخر ہے۔ اس لڑائی میں ہماری سب سے بڑی طاقت اور حوصلہ افزائی عوام کی مدد ہے۔”

تبصرے
Loading...