کروناوائرس کی وباء کے دوران احساسِ ذمہ داری کے ساتھ عالمی سطح پر ایک دوسرے سے تعاون کرنا ہوگا، صدر ایردوان

0 712

وڈیو کانفرنس کے ذریعے جی20 رہنماؤں کے ایک ورچوئل اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے صدر رجب طیب ایردوان نے کہا کہ "کروناوائرس کی عالمگیر وباء نے ایک مرتبہ پھر جی20 کی ایک دوسرے کے ساتھ تعاون اور مفاہمت کی رُوح کی اہمیت کو اجاگر کیا ہے۔ ہمیں رہنما ہدایات لینا ہوں گی، ذمہ داریاں قبول کرنا ہوں گا اور اس عمل کے دوران عالمی سطح پر ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کرنا ہوگا۔”

صدر رجب طیب ایردوان نے وڈیو کانفرنس کے ذریعے کروناوائرس (COVID-19) پر جی20 رہنماؤں کے ورچوئل اجلاس سے خطاب کیا۔

صدر ایردوان نے کہا کہ ترکی کروناوائرس کی تشخیص کے لیے کِٹ، ویکسین اور ادویات کی تیاری کے لیے اپنی کوششوں کو جاری رکھے ہوئے ہے۔ میرا ماننا ہے کہ اس عالمگیر وباء نے ایک مرتبہ پھر ہمیں یاد دلا دیا ہے کہ اپنی زبانوں، مذاہب اور ممالک کے فرق کے باوجود ہمارا نصیب ایک ہی ہے۔ ہم میں سے کوئی بھی محض اپنے آپ کو بچانے کی اور یکطرفہ پالیسیوں کو افورڈ نہیں کر سکتا۔

"مرض کی تشخیص اور علاج میں تجربہ ایک دوسرے کے ساتھ شیئر کرنے ہیں”

عالمگیر وباء پر قابو پانے اور مرض کی تشخیص و علاج میں تجربے کو ایک دوسرے کے ساتھ شیئر کرنے کی ضرورت ہے، اس حوالے سے صدر ایردوان نے کہا کہ "کروناوائرس کی عالمگیر وباء نے ایک مرتبہ پھر جی20 کی ایک دوسرے کے ساتھ تعاون اور مفاہمت کی رُوح کی اہمیت کو اجاگر کیا ہے۔ ہمیں رہنما ہدایات لینا ہوں گی، ذمہ داریاں قبول کرنا ہوں گا اور اس عمل کے دوران عالمی سطح پر ایک دوسرے کے ساتھ تعاون کرنا ہوگا۔جیسا کہ ہم نے عالمی مالیاتی بحران کے دوران کیا، اسی طرح فوری قدم اٹھانا ہوگا اور عالمی اعتماد کو یقینی بنانے کے لیے مشترکہ کوششیں کرنا ہوں گی۔”

"میں صحت کے عالمی بحران کا مقابلہ کرنے کے لیے تمام ممالک سے حصہ لینے کا مطالبہ کرتا ہوں”

ترقی پذیر ممالک، بالخصوص افریقہ، کی مدد کی اہمیت کو اجاگر کرتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ "ہم سب کے لیے خطرہ بننے والے اس وائرس نے ہمیں انسانیت کے مشترکہ دشمن کے خلاف متحد ہونے کا موقع دیا ہے۔ ہمیشہ کی طرح ترکی ایک مرتبہ پھر اس آفت کے سامنے متحد ہے اور تعاون کر رہا ہے۔ میں تمام ممالک سے مطالبہ کرتا ہوں کہ صحت کے اس عالمی بحران کا مقابلہ کرنے میں حصہ لیں یہاں تک کہ پوری انسانیت سکون کا سانس لے۔”

تبصرے
Loading...