ہمیں ڈیٹاپروڈکشن سے ڈیٹا سیکیورٹی، دفاع، طب اور آئی ٹی سے اے آئی تک سب میدانوں میں اپنے قدموں پر کھڑا ہونا ہے، ایردوان

0 1,135

ترک صدر رجب طیب ایردوان نے میتو ٹیکنو پولیس آئی ٹی انوویشن سنٹر کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ "ہمیں ڈیٹاپروڈکشن سے ڈیٹا سیکیورٹی، دفاع، طب اور انفارمیشن ٹیکنالوجی سے آرٹیفیشیل انٹیلی جنس تک سب میدانوں میں اپنے قدموں پر کھڑا ہونا ہے۔ اگر ہم کھڑے نہیں ہو سکتے تو ہمیں دوسروں کے کنٹرول میں جانا ہو گا۔ جس طرح ہم اپنی سرزمین پر اپنی حکومت بنائے بغیر آزاد نہیں رہ سکتے اسی طرح ہم ٹیکنالوجی پر اپنی دسترس کو مضبوط بنائے بغیر اپنی آزادی کو قائم نہیں رکھ سکتے”۔

ہم ایک ایسے جغرافیے میں رہتے ہیں جو انسانی تاریخ میں قدیم ترین تعلیمی اداروں کا مرکز تھا

ترک صدر ایردوان نے مزید کہا کہ "ہم ایک ایسے جغرافیے میں رہتے ہیں جو انسانی تاریخ میں قدیم ترین تعلیمی اداروں کا مرکز تھا۔ ہاران سے نوشیبن، جیزرے سے ہاتے، ازمیر سے بورصا، ایزیورم سے استنبول تک اس ملک کا قریہ قریہ قدیم تعلیمی اداروں کے نشانات سے بھرا ہوا ہے”۔

اس بات کا اشارہ کرتے ہوئے کہ قومی خود ارادیت کی علامات میں علاقہ، پرچم اور قومی کرنسی کو شامل کیا گیا ہے، ایردوان نے کہا کہ ٹیکنالوجی آزادی کے ان تمام معیارات میں درجہ اول پر موجود ہے۔ انہوں نے کہا کہ ”

ہمیں ڈیٹاپروڈکشن سے ڈیٹا سیکیورٹی، دفاع، طب اور انفارمیشن ٹیکنالوجی سے آرٹیفیشیل انٹیلی جنس تک سب میدانوں میں اپنے قدموں پر کھڑا ہونا ہے۔ اگر ہم کھڑے نہیں ہو سکتے تو ہمیں دوسروں کے کنٹرول میں جانا ہو گا۔ جس طرح ہم اپنی سرزمین پر اپنی حکومت بنائے بغیر آزاد نہیں رہ سکتے اسی طرح ہم ٹیکنالوجی پر اپنی دسترس کو مضبوط بنائے بغیر اپنی آزادی کو قائم نہیں رکھ سکتے”۔

ٹیکنالوجیکل آزادی کی اہمیت بیان کرتے ہوئے ترک صدر ایردوان نے کہا کہ ” ہم اس وقت تک اپنے مقاصد حاصل نہیں کرسکتے جب تک ایک ایسا ملک نہ بن جائیں جو صرف صارف بننے کے بجائے خود ٹیکنالوجی کو ڈیزائن، ڈویلپ اور پیدا نہیں کرتا۔ اگر ٹیکنالوجی کی دور بہت تیز ہے تو ہمیں اس سے تیز چلنا ہو گا اور زیادہ محنت کرنا ہو گی”۔

تبصرے
Loading...