ہم دہشتگردوں کا اپنے دروازوں پر پہنچنے کا انتظار نہیں کر سکتے، ہم انہیں ان کی پناہ گاہوں میں ختم کر دیں گے، ایردوان

0 1,238

ترک صدر رجب طیب ایردوان نے زونگلدک میں آق پارٹی کی ریلی اور بعد ازاں افطار پر مختصر خطاب کیا اور کہا، "ہم نے عفرین کے بعد باقی جگہوں سے دہشتگردوں کے پاک کرنے کے لیے ضروری اقدامات اٹھائے ہیں۔ ہم تمام دہشتگردوں بشمول ان کے رہنماؤں سے 34 سال ملت کے بچوں کے قتل عام کرنے کا حساب وصول کریں گے۔ ہمارے شہیدوں اور غازیوں کا خون زمین پر رائیگاں نہیں جائے گا”۔

ہم اپنے مقامی ذرائع کے بہترین استعمال کریں گے

ترکی کے کوئلے کے ذرائع کی طرف اشارہ کرتے ہوئے ترک صدر ایردوان نے کہا کہ وہ قومی انرجی اور مائن پالیسی بنا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا، "یہ پالیسی جو ایک طویل اور ان تھک کوششوں کے بعد بنی ہے اس کے تین بازو ہیں، جو سپلائی کا دفاع، مقامی پیداوار اور قابل ذکر مارکیٹ ہیں۔ ہمارا مقصد بیرونی وسائل کے ذرائع پر اپنے انحصار کم کرنے کے لئے اپنے مقامی وسائل کا بہترین استعمال کرنا ہے۔ ہر میدان میں اس کے تحت بہت اہم اقدامات کئے گئے ہیں۔ چونکہ ہم نے محسوس کیا ہے کہ ہم توانائی کی درآمد شدہ پالیسیوں کے ساتھ آگے نہیں بڑھ سکتے ہیں، ہم نے اپنے ذرائع کو حرکت دینا شروع کی ہے۔ اور اس ضمن میں ہم نے اچھا خاصا سفر طے کر لیا ہے”۔

کول مائنگ سیکٹر کو ترکی میں آگے بڑھانے کے لیے نئے راستوں، طریقوں اور حکمت عملی کا سہارا لیا جا رہا ہے، صدر ایردوان نے کہا، "ہم نے سائنسی طور پر اپنے ذرائع کی تلاش سے لے کر ان ذرائع کی شناخت تک اور اس کی پیداوار کے استعمال سے اس کے خطرات اثرات سے بچنے تک تمام مراحل سے خود نبٹ چکے ہیں”۔

ماضی کی برعکس، ہم دہشتگردوں کا اپنے دروازوں پر پہنچنے کا انتظار نہیں کر سکتے

صدر ایردوان نے کہا، "ہم اپنے ملک کی سلامتی، فلاح و بہبود اور بقا کے لئے کام جاری رکھیں گے جس کے لئے ہمارے شہید نے اپنی جان قربان کی”، انہوں نے کہا کہ ملک کے اندر اور باہر کسی جگہ پر بھی دہشتگرد تنظیموں کو نہیں پنپنے دیا جائے گا۔ صدر ایردوان نے زور دیا کہ ہم ترکی کے دہشتگردی کے خاتمے کے ایجنڈا کو مکمل کرنے کے لیے پُرعزم ہیں۔ مزید کہا، "ماضی کی برعکس، ہم دہشتگردوں کا اپنے دروازوں پر پہنچنے کا انتظار نہیں کر سکتے، ہم انہیں ان کی پناہ گاہوں میں ختم کر دیں گے”۔

ترکی کی شام، عفرین، جرابلس اور شمالی عراق میں موجودگی پر متوجہ کراتے ہوئے ترک صدر نے کہا کہ اگر ضروری ہوا تو ترکی سنجار میں بھی جائے گا اور وہ کرے گا جو وہاں کرنا ضروری ہوا۔ صدر ایردوان نے مزید کہا، "ہم نے عفرین کے بعد باقی جگہوں سے دہشتگردوں کے پاک کرنے کے لیے ضروری اقدامات اٹھائے ہیں۔ ہم تمام دہشتگردوں بشمول ان کے رہنماؤں سے 34 سال ملت کے بچوں کے قتل عام کرنے کا حساب وصول کریں گے۔ ہمارے شہیدوں اور غازیوں کا خون زمین پر رائیگاں نہیں جائے گا”۔

تبصرے
Loading...