عالمی وباء کے خلاف جدوجہد جاری رکھیں گے، صدر ایردوان

0 165

صدارتی کابینہ کے اجلاس کے بعد قوم سے خطاب کرتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ "ہم 83 ملین شہری عالمی وباء کے خلاف اپنی بھرپور جدوجہد جاری رکھیں گے۔ نئے مریض اور اموات کے ساتھ ساتھ انتہائی نگہداشت میں موجود مریضوں میں بھی کمی آ رہی ہے جبکہ صحت مند ہونے والے افراد اور ٹیسٹ کی تعداد میں اضافہ بھی ہو رہا ہے۔”

صدر رجب طیب ایردوان نے وڈیو کانفرنس کے ذریعے صدارتی کابینہ کے اجلاس کے بعد قوم سے خطاب کیا۔

” عالم گیر وباء نے عالمی تعمیرِ نو کی جستجو کی تحریک دی ہے”

کروناوائرس کے خلاف ترکی کی کامیابی کی جانب توجہ دلاتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ "10 مارچ کو کروناوائرس کا پہلا مریض شناخت ہوا جس کے بعد دو مہینے گزر چکے ہیں۔ اب ہم ایک ایسے دَور سے گزر رتے ہیں جس میں یہ عالم گیر وباء محض ایک طبّی مسئلہ نہیں، بلکہ عالمی تعمیرِ نو کو تحریک دے رہی ہے۔ ہم 83 ملین شہری عالمی وباء کے خلاف اپنی بھرپور جدوجہد جاری رکھیں گے۔ نئے مریض اور اموات کے ساتھ ساتھ انتہائی نگہداشت میں موجود مریضوں میں بھی کمی آ رہی ہے جبکہ صحت مند ہونے والے افراد اور ٹیسٹ کی تعداد میں اضافہ بھی ہو رہا ہے۔ میں صبر اور حوصلے کے ساتھ ساتھ قوانین کی پیروی کرنے پر ہر شہری کا شکریہ ادا کرتاہوں۔”

"کروناوائرس کی عالمی وباء کو شکست دینے میں دنیا کو کچھ وقت لگے گا”

صدر ایردوان نے کہا کہ "ہمیں اس وقت جن حالات کا سامنا ہے، ان سے ممکن ہے کہ ہم وباء کے دوران لگائی گئی پابندیوں کو نرم کریں اور حالات کو معمول پر لانے کے لیے اقدامات اٹھائیں۔ البتہ جیسا کہ میں نے پچھلے ہفتے کہا تھا کہ ہم ایک نئے دور میں داخل ہو چکے ہیں کہ جس میں باقی دنیا کی طرح ہمیں بھی اپنی زندگیوں کو چند قواعد و ضوابط کا پابند بنانا ہوگا۔ یہ بات واضح ہے کہ دنیا کو کروناوائرس کو مکمل شکست دینے میں کچھ وقت لگے گا۔”

وباء کے بعد ظاہر ہونے والے نئے عالمی حالات میں ترکی کے لیے زیادہ مفید مقام یقینی بنانے کے لیے اقدامات پر صدر ایردوان نے کہا کہ "ہم صحت عامہ کے نظام کے حوالے سے کسی غفلت کا مظاہرہ کیے بغیر ملک کو زیادہ مضبوط اور زیادہ ترقی یافتہ بنانے کے لیے اپنی کوششیں جاری رکھنے کا عزم رکھتے ہیں۔”

تبصرے
Loading...