ہم اپنے خطے اور دنیا میں ہر ایک سے اچھے تعلقات اور مضبوط تعاون قائم کرنا چاہتے ہیں، ایردوان

0 856

ترک صدر رجب طیب ایردوان نے سامسن میں آق پارٹی کی صوبائی کانگریس سے خطاب کرتے ہوئے کہا، "ہم اپنے خطے اور دنیا بھر میں سب کے ساتھ اچھے تعلقات اور مضبوط تعاون قائم کرنا چاہتے ہیں، خصوصا اپنے اتحادیوں کے ساتھ۔ پہلے بھی یہ سوچنا ممکن نہیں کہ ترکی مخالفت کی جائے گی، جس کے جمہوریت سے معیشت تک ہر میدان میں بڑے اہداف ہیں۔ ہم اپنے دوستوں کی تعداد میں اضافہ کر کے خوش ہوں گے۔ تاہم اگر کچھ لوگ تسلسل کے ساتھ ہماری ناک کے نیچے سازشی منصوبے بُننا جاری رکھتے ہیں جیسے ہمارے گلے پر چاقو رکھا جائے پھر ہم کسی کا لحاظ نہیں کریں گے”۔

ترک صدر نے کہا کہ کوئی دعویٰ نہیں کر سکتا کہ ترک فوج نے شام میں جارحیت کی ہے۔ یہ سب وہ مغربی کہہ رہے ہیں جن کی ظالمانہ جارحیت کی تاریخ رکھتے ہیں۔ آج بھی ان کی جارحیت کے آثار افریقہ میں پائے جاتے ہیں۔ ترک صدر نے کہا کہ ترکی کی تاریخ میں ایسی کوئی چیز نہیں ہے اور اس کے بجائے ترکی نے ہمیشہ اپنے ہاتھ ان جگہوں تک بڑھائے جنہیں مدد کی ضرورت تھی۔

انہوں نے کہا کہ ترک فوج کے آپریشن کا مقصد وہاں کے مقامی شہریوں کو اپنے مستقبل کا فیصلہ خود کرنے کا حق دینا ہے، صدر ایردوان نے کہا، "ہم بہت جلد شامی سرحدوں کے ساتھ موجود اپنے بھائی اور بہنوں کے ساتھ ہوں گے جنہوں نے اپنی آنکھیں اور دل ہماری طرف موڑے ہیں، جب تک ہم اپنے تمام شامی بھائیوں اور بہنوں کو بھی بچا نہیں لیتے ہم آپریشن بند نہیں کریں گے”۔

تبصرے
Loading...