ہم سال 2020 کا اختتام زبردست شرحِ نمو کے ساتھ کریں گے، صدر ایردوان

0 152

آق پارٹی کے صوبائی صدور سے بذریعہ وڈیو کانفرنس خطاب کرتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ ہم نے پیداوار اور روزگار کو سہارا دینے کے لیے تمام ذرائع استعمال کیے۔ "ہم بلاشبہ جولائی میں آگے کی جانب ایک بڑی جست لگائیں گے۔ ہم سال 2020ء کا اختتام زبردست شرحِ نمو کے ساتھ کریں گے حالانکہ یہ پوری دنیا خاص طور پر یورپ کے لیے ایک خسارے کا سال ہے۔”

صدر اور انصاف و ترقی (آق) پارٹی کے چیئرمین رجب طیب ایردوان نے پارٹی کے صوبائی صدور سے بذریعہ وڈیو کانفرنس خطاب کیا۔

صدر ایردوان نے کہا کہ "ترکی کامیابی کے ساتھ وباء سے نمٹ رہا ہے اور اپنے اقدامات پر داد و تحسین سمیٹ رہا ہے۔ لیکن مختلف ممالک، خاص طور پر یورپ کے کچھ ملک سیاسی وجوہات کی بناء پر ترکی کے خلاف پالیسیوں کی پیروی کر رہے ہیں۔ جس طرح ہم اپنے خلاف اب تک کھڑی ہونے والی تمام رکاوٹوں کو عبور کرنے میں کامیاب ہوئے ہیں، اسی طرح ہم ان کے خلاف بھی کامیاب ہوں گے۔”

"ہم اپنے اہداف کو حاصل کریں گے”

جون کے ابتدائی ڈیٹا کو امید افزاء قرار دیتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ”ہم بلاشبہ جولائی میں آگے کی جانب ایک بڑی جست لگائیں گے۔ ہم سال 2020ء کا اختتام زبردست شرحِ نمو کے ساتھ کریں گے حالانکہ یہ پوری دنیا خاص طور پر یورپ کے لیے ایک خسارے کا سال ہے۔”

"ترکی لیبیا کے عوام کو باغیوں کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑے گا”

صدر ایردوان نے کہا کہ "ہم لیبیا کے اتحاد، سالمیت اور مستقبل کے لیے لیبیائی کی قانونی حکومت کی کوششوں کی تائید کرتےہیں۔ ہمیں افسوس ہے کہ جمہوریت، انسانی حقوق اور قانون کی حکمرانی کے درس دینے والے کچھ ممالک باغیوں کی حمایت کر رہے ہیں۔ ترکی لیبیا کے عوام کو باغیوں کے رحم و کرم پر نہیں چھوڑے گا اور بین الاقوامی قانونی حدود کے اندر رہتے ہوئے اقدامات اٹھائے گا۔ وہ کہ جنہوں نے وباء کے دوران اپنے شہریوں کی التجاؤں پر کان بند کر لیے، انسانی حقوق اور قانون کی بالادستی کے حوالے سے ترکی کے طرز عمل پر سوال اٹھانے کا حق نہیں رکھتے۔ اب جبکہ دنیا 21 ویں صدی کے چوتھائی حصے کی تکمیل کے قریب ہے، یہ شرمناک بات ہے کہ کچھ ملک اب بھی اپنے نوآبادیاتی طرزِ عمل سے چھٹکارا حاصل نہیں کر پائے۔ اپنی تاریخ اور تہذیب سے تحریک پاتے ہوئے ہم پورے عزم کے ساتھ وہ کام جاری رکھیں گے جو ہمارے لیے اور ہمارے دوستوں کے لیے ٹھیک ہے۔”

تبصرے
Loading...