ہم ایک عظیم اور مضبوط تر ترکی کے قیام کے لیے کامل جدوجہد کریں گے، صدر ایردوان

0 860

صدر ایردوان نے جمہوریہ کے قیام کے 98 سال مکمل ہونے پر ایک پیغام جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ "ہم بحیثیتِ قومی اپنا اتحاد، یگانگت اور بھائی چارہ قائم رکھیں گے، جو ایک عظیم تر اور مضبوط ترکی کے قیام کے لیے ہماری جدوجہد میں سب سے بڑی ضمانت ہیں۔ قومی جدوجہد کی کامیابی اور جمہوریہ کے قیام کا سبب بننے والا فولادی عزم اس مقدس جدوجہد میں ہمارا رہنما رہے گا جو ہم 98سالوں سے کر رہے ہیں اور اب بھی جاری و ساری ہے۔”

صدر رجب طیب ایردوان نے جمہوریہ ترکی کے قیام کے 98 سال مکمل ہونے پر ایک خصوصی پیغام جاری کیا ہے۔

صدر نے کہا ہے کہ "میں وطنِ عزیز میں اور بیرونِ ملک رہنے والے اپنے شہریوں اور اُن دوستوں کو 29 اکتوبر کو یومِ جمہوریہ کے موقع پر مبارک باد پیش کرتا ہوں، جو ہماری عظیم تاریخ کے سنہری لمحات میں شمار ہونے والے اس دن پر فخر کرتے ہیں۔ میں جمہوریہ کے بانی غازی مصطفیٰ کمال پاشا اور ان کے دلیر ساتھیوں کو بھی 98 ویں یوم جمہوریہ پر شکر گزاری کے احساس کے ساتھ یاد کرتا ہوں۔”

شہداء کے لیے دعائے مغفرت کرتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ "اپنے علاوہ پورے ملک اور اس کے عوام کی جانب سے میں ان غازیوں کا شکریہ ادا کرتا ہوں جنہوں نے اس مقدس مقصد کے لیے جنگ لڑی۔ میں پارلیمان کے ان تمام اراکین کا بھی شکر گزار ہوں جو ملک کے لیے خدمات انجام دینے والی پہلی اسمبلی سے اب تک اپنا کردار ادا کرتے رہے ہیں اور ضرورت پڑنے پر کسی قیمت سے دریغ نہیں کیا۔ میں خدا سے دعاگو ہوں کہ وہ ملک کے اندر اور سرحدوں سے باہر ترکی کی استقلال اور قوم کی حفاظت، امن و سکون اور بہبود کے لیے بے لوث خدمات انجام دے رہی ہیں۔

"ہم ترکی کو عظیم تر بنانے کی کوششوں کو جاری رکھیں گے”

سرکاری عہدیداروں، غیر سرکاری انجمنوں اور کاروباری افراد کو مبارک باد دیتے ہوئے کہ جو دنیا بھر میں ہمارے پرچم کو فخریہ طور پر لہرا رہے ہیں، صدر ایرودان نے کہا کہ "ہم 8.4 کروڑ اپنی عمیق تاریخ اور قدیم روایات سے اخذ کردہ اتحاد و یگانگت کی کوششیں جاری رکھیں کے جو ترکی کو اپنے اہداف کے حصول کے لیے عظیم تر بنائیں گے۔ ہم نے اپنے صحت کے مضبوط نظام کی قوت اور استحکام کی بدولت کرونا وائرس کی وبا کا سنگین ترین مرحلہ گزار لیا ہے، جس نے پوری دنیا کو ہلا کر رکھ دیا تھا۔ اسی طرح ہم نے 2020ء میں جب عالمی معیشت 3 فیصد تک سکڑ گئی، ہم نے سال کا اختتام 1.8 فیصد کی نمو کے ساتھ کیا۔ ہم نے کسی پہلو سے کوئی کمی کوتاہی نہیں کی، دہشت گردی کے خلاف جنگ سے لے کر اپنے سرحد پار آپریشنز کے لیے سرمائے کی فراہمی تک۔ اس دور میں ہم نے اپنے لیبیائی بھائیوں اور بہنوں کی مدد کی کہ جنہیں باغیوں کا سامنا تھا اور آذربائیجانی ترکوں کی بھی کہ جو قراباخ سے قبضہ چھڑانے کی جدوجہد کر رہے تھے، الحمد للہ، دونوں ملکوں کی تقدیر بدل گئی۔

"ہم نے ترکی اور ترک جمہوریہ کو مشرقی بحیرۂ روم کے قدرتی وسائل سے محروم رکھنے کی کوششیں ناکام بنا دیں”

صدر ایردوان نے زور دیا کہ "جب لیبیا میں باغیوں کو مکمل شکست ہوئی اور آذربائیجانی بھائیوں اور بہنوں کو تقریبآً 30 سال کے قبضے کے بعد اپنی زمینیں واپس ملیں۔ ہم نے بھی اپنے ملک اور ترک جمہوریہ شمالی قبرص کو مشرقی بحیرۂ روم کے قدرتی وسائل سے محروم رکھنے کی کوششیں ناکام بنائیں۔ وہ کامیابیاں جو ہم نے وبا کے بدترین حالات کے باوجود معیشت، داخلی سیاست اور خارجہ پالیسی کے میدان میں حاصل کیں، ملک کے مضبوط بنیادی ڈھانچے کے ساتھ ساتھ صدارتی نظامِ حکومت کے مؤثر ہونے کی علامت بھی ہیں۔ الحمد للہ، ہم نے معیشت، پیداوار اور خاص طور پر برآمدات کے معاملے میں گزشتہ سال جو رفتار پکڑی تھی وہ 2021ء میں بھی جاری و ساری ہے۔”

صدر ایردوان نے مزید زور دیا کہ "جمہوریہ کا صد سالہ جشن اب افق پر ظاہر ہے، ہم کسی طاقت کو، کسی غلیظ منظرنامے یا مکارانہ حملے کو ترکی کو اپنے راستے سے ہٹانے نہیں دیں گے۔ ہم بحیثیتِ قومی اپنا اتحاد، یگانگت اور بھائی چارہ قائم رکھیں گے، جو ایک عظیم تر اور مضبوط ترکی کے قیام کے لیے ہماری جدوجہد میں سب سے بڑی ضمانت ہیں۔ قومی جدوجہد کی کامیابی اور جمہوریہ کے قیام کا سبب بننے والا فولادی عزم اس مقدس جدوجہد میں ہمارا رہنما رہے گا جو ہم 98سالوں سے کر رہے ہیں اور اب بھی جاری و ساری ہے۔ خدا ہماری مدد اور رہنمائی کرے! ان خیالات کے ساتھ میں 29 اکتوبر یومِ جمہوریہ پر ایک مرتبہ پھر آپ کو مبارک باد پیش کرتا ہوں۔ اللہ آپ کو بھرپور صحت، امن اور سکون عطا کرے! ہمارے شہدا کے درجات بلند کرے! یومِ جمہوریہ مبارک ہو!”

تبصرے
Loading...