افریقی ممالک کے ساتھ اپنے تجارتی حجم کو 50 ارب ڈالرز تک لے جائیں گے، رجب طیب ایردوان

0 260

ترک-الجزائر بزنس فورم سے خطاب کرتے ہوئے صدر رجب طیب ایردوان نے کہا ہے کہ "ترکی اور افریقی ممالک کے درمیان مجموعی تجارتی حجم پچھلے 27 سالوں میں 381 فیصد بڑھا اور 26 ارب ڈالرز تک پہنچا ہے۔ مستقبل میں ہم اِس بر اعظم کے ساتھ تعاون کو مزید بڑھائیں گے اور تجارتی حجم کو 50 ارب ڈالرز تک لے جانے کے لیے شانہ بشانہ کام کریں گے۔”

صدر رجب طیب ایردوان نے ترکی-الجزائر بزنس فورم سے خطاب کیا۔

صدر ایردوان نے سب سے پہلے اپنی اور اپنے وفد کی شاندار میزبانی پر الجزائر کے صدر عبد المجید تبون اور الجزائری حکام کا شکریہ ادا کیا۔

"ہم افریقہ کے ساتھ تعاون بڑھانے پر کام کریں گے”

اس جانب توجہ دلاتے ہوئے کہ پچھلے 27 سالوں میں ترکی اور افریقی ممالک کے درمیان تجارتی حجم 381 فیصد بڑھا اور 26 ارب ڈالرز تک پہنچا، صدر ایردوان نے کہا کہ "بر اعظم افریقہ کے لیے ہی ہمارا برآمدی حجم 16 ارب ڈالرز تک پہنچ چکا ہے۔ خطے میں ترکی کی خالص سرمایہ کاری مالیت 2 ارب ڈالرز تک بڑھی۔ ان سرمایہ کاریوں کی مارکیٹ قدر 6 ارب ڈالرز سے تجاوز کر چکی ہے۔ 2015ء میں ترکی اور افریقی ممالک کے درمیان 30 بزنس کونسلز تھیں۔ یہ تعداد 2019ء میں بڑھ کر 45 تک جا پہنچی ہے۔ ترک کوآپریشن اینڈ کوآرڈی نیشن ایجنسی (TIKA)، اپنے 22 پروگرام کوآرڈی نیشن دفاتر کے ساتھ، اس براعظم میں نئے اور حقیقی ترقیاتی منصوبوں کی قیادت کر رہا ہے۔ ہماری پرچم بردار ایئر لائن، ترکش ایئرلائنز، استنبول سے 38 افریقی ممالک کے 58 مقامات کے لیے پروازیں چلاتی ہے۔ ترکیہ اسکالرشپ پروگرام کے تحت ہم 4,500 افریقی طالب علموں کو بیچلرز، ماسٹرز اور پی ایچ ڈی سطح کی تعلیم فراہم کر رہے ہیں۔ ان شاء اللہ ہم مستقبل میں اس براعظم کے ساتھ تعاون کو مزید بہتر بنائیں گے۔ ہم اپنے تجارتی حجم کو 50 ارب ڈالرز تک لے جانے کے لیے اُن کے شانہ بشانہ کام کریں گے۔”

"الجزائر شمالی افریقہ میں ترکی کے اہم تزویراتی شراکت داروں میں سے ایک ہے”

صدر ایردوان نے کہا کہ "ہم الجزائر کو ایک دوست اور برادر ملک کے ساتھ ساتھ شمالی افریقہ میں اپنے تزویراتی شراکت داروں میں سے ایک سمجھتے ہیں۔ الجزائر مغرب اور افریقہ کے لیے ترکی کی اہم گزرگاہوں میں سے ایک ہے۔”

صدر مملکت نے کہا کہ "ترکی کے لیے پورے بر اعظم افریقہ، بالخصوص شمالی افریقہ، سے وابستگی ہونے کا مطلب اقتصادی و تجارتی فوائد سے کہیں بڑھ کر ہے۔ ان علاقوں سے ہماری قربت کبھی بھی یک طرفہ فوائد سمیٹنے کی خواہش کے ساتھ نہیں رہی۔ ہم مل کر پیداوار کرنا، مل کر آگے بڑھنا اور ایک ساتھ آسودہ ہونا چاہتے ہیں۔”

صدر ایردوان نے مزید کہا کہ "ہم نے اپنے دو طرفہ تجارتی حجم میں جتنی جلدی ممکن ہو سکے 5 ارب ڈالرز تک کا اضافہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس کے علاوہ مشترکہ اعلامیے کے مطابق ہم نے دونوں ممالک کے درمیان ایک اعلیٰ سطحی تعاون کونسل بنائی ہے۔”

ترکی اور الجزائر کے مابین آزاد تجارت کے معاہدے کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے صدر طیب ایردوان نے کہا کہ "میرا ماننا ہے کہ اپنے اقتصادی تعلقات کو مزید بہتر بنانے کے لیے آزاد تجارت کے معاہدے پر مذاکرات شروع کرنا انتہائی موزوں ہوگا۔”

دفاعی صنعت میں ترکی کی اہم پیش رفت پر روشنی ڈالتے ہوئے صدر ایردوان نے کہا کہ ترکی دفاعی شعبے میں الجزائر کے ساتھ مزید تعاون بڑھانا چاہتا ہے۔

تبصرے
Loading...